رواة الحدیث

نتائج
نتیجہ مطلوبہ تلاش لفظ / الفاظ: ابو سعيد المهري 204
کتاب/کتب میں: صحیح مسلم
6 رزلٹ جن میں تمام الفاظ آئے ہیں۔
رواۃ الحدیث: ابو سعيد الخدري ( 3260 ) ، ابو سعيد المهري ( 204 ) ، سعيد بن ابي سعيد المقبري ( 3280 ) ، الليث بن سعد الفهمي ( 6641 ) ، قتيبة بن سعيد الثقفي ( 6460 ) ، حدیث ۔۔۔ ابو سعید مولیٰ مہری سے روایت ہے کہ وہ ابوسعید خدری ؓ کے پاس آئے حرہ کی راتوں میں (یعنی جن دنوں مدینہ طیبہ میں ایک فتنہ مشہور ہوا ہے اور ظالموں نے مدینہ طیبہ کو لوٹا ہے سن ۶۳ ہجری میں) اور مشورہ کیا ان سے کہ مدینہ سے کہیں اور چلے جائیں اور شکایت کی ان سے وہاں کی گرانی نرخ کی اور کثرت عیال کی اور خبر دی ان کو کہ مجھے صبر نہیں آ سکتا مدینہ کی محنت اور بھوک پر ، تو سیدنا ابوسعید خدری ؓ نے فرمایا : کہ خرابی ہو تیری میں تجھے تھوڑے یہاں رہنے کا حکم کرتا ہوں بلکہ میں نے رسول اللہ ﷺ سے سنا ہے کہ وہ فرماتے تھے : ” کہ صبر نہیں کرتا ہے کوئی یہاں کی تکلیفوں پر اور پھر مر جاتا ہے مگر اس کا شفیع یا گواہ ہوں قیامت کے دن جب وہ مسلمان ہو ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 592  -  3k
رواۃ الحدیث: ابو سعيد الخدري ( 3260 ) ، ابو سعيد المهري ( 204 ) ، يزيد بن ابي سعيد المهري ( 8370 ) ، يزيد بن قيس الازدي ( 8366 ) ، عمرو بن الحارث الانصاري ( 6080 ) ، عبد الله بن وهب القرشي ( 5147 ) ، سعيد بن منصور الخراساني ( 3401 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابوسعید خدری ؓ سے روایت ہے ، رسول اللہ ﷺ نے بنی لحیان کی طرف لشکر بھیجا اور فرمایا : ”ہر دو آدمیوں سے ایک نکلے ۔ “ اور پیچھے رہ جانے والے سے فرمایا : ”جو گھر بار کی خبر گیری رکھے اس کو مجاہد کا آدھا ثواب ملے گا ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 552  -  2k
رواۃ الحدیث: ابو سعيد الخدري ( 3260 ) ، ابو سعيد المهري ( 204 ) ، يحيى بن ابي كثير الطائي ( 8208 ) ، الحسين بن ذكوان المعلم ( 1327 ) ، عبد الوارث بن سعيد العنبري ( 5270 ) ، عبد الصمد بن عبد الوارث التميمي ( 4548 ) ، إسحاق بن منصور الكوسج ( 970 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابوسعید خدری ؓ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے ایک لشکر بھیجا ۔ باقی حدیث اسی طرح ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 448  -  2k
رواۃ الحدیث: ابو سعيد الخدري ( 3260 ) ، ابو سعيد المهري ( 204 ) ، يحيى بن ابي كثير الطائي ( 8208 ) ، علي بن المبارك الهنائي ( 5745 ) ، إسماعيل بن علية الاسدي ( 1003 ) ، زهير بن حرب الحرشي ( 3036 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابوسعید خدری ؓ سے روایت ہے ، رسول اللہ ﷺ نے ایک لشکر بنی لحیان کی طرف بھیجا جو ہذیل قبیلہ کی ایک شاخ ہے اور فرمایا : “ ”دو مردوں میں ایک مرد نکلے ہر گھر میں سے اور ثواب دونوں کا ہو گا ۔ “ (ایک کو جہاد کا اور دوسرے کو مجاہد کے گھربار کی خبر گیری کا) ۔
Terms matched: 4  -  Score: 396  -  2k
رواۃ الحدیث: ابو سعيد الخدري ( 3260 ) ، ابو سعيد المهري ( 204 ) ، يحيى بن ابي إسحاق الحضرمي ( 8194 ) ، وهيب بن خالد الباهلي ( 8186 ) ، إسماعيل بن علية الاسدي ( 1003 ) ، حماد بن إسماعيل البصري ( 2485 ) ، حدیث ۔۔۔ ابوسعید نے کہا کہ ہم کو مدینہ میں ایک بار محنت اور شامت فاقہ کو پہنچی اور میں سیدنا ابوسعید خدری ؓ کے پاس گیا اور ان سے کہا کہ میں کثیر العیال ہوں اور ہم کو سختی پہنچی ہے اور میں نے ارادہ کیا ہے کہ اپنے عیال کو کسی ارزاں اور سرسبز ملک میں لے جاؤں ۔ سیدنا ابوسعید خدری ؓ نے فرمایا کہ مدینہ کو نہ چھوڑو اس لیے کہ ہم ایک بار نبی ﷺ کے ساتھ نکلے میں گمان کرتا ہوں کہ انہوں نے کہ یہاں تک کہ عسفان تک پہنچ گئے اور وہاں کئی شب ٹھہرے ، سو لوگوں نے کہا : قسم ہے اللہ تعالیٰ کی کہ ہم یہاں بے کار ٹھہرے ہوئے ہیں اور ہمارے عیال پیچھے چھٹے ہوئے ہیں اور ہم کو ان کے اوپر اطمینان نہیں (یعنی خوف ہے کہ کوئی دشمن نہ ستائے) اور یہ خبر رسول اللہ ﷺ کو پہنچی تو آپ ﷺ نے پوچھا : ” کہ یہ کیا بات ہے جو مجھ کو پہنچی ہے ؟ ۔ “ راوی نے کہا کہ میں نہیں جانتا کہ یہ کیا بات ہے ؟ فرمایا : ” قسم ہے اس اللہ کی جس کی میں قسم کھاتا ہوں یا فرمایا : قسم ہے اس پروردگار کی کہ میری جان اس کے ہاتھ میں ہے البتہ میں نے ارادہ کیا یا فرمایا : اگر چاہو تم ۔ “ میں نہیں جانتا کہ کیا فرمایا ان دونوں باتوں میں سے ۔ فرمایا : ” کہ البتہ حکم کروں میں اپنی اونٹنی کو کہ وہ کسی جائے اور پھر اس کی ایک گرہ بھی نہ کھولوں یہاں تک کہ داخل ہوں میں مدینہ میں ۔ “ اور فرمایا : ” کہ یا اللہ ! ابراہیم علیہ السلام نے مکہ کو حرم قرار دیا اور میں نے مدینہ کو حرم ٹھہرایا دو گھاٹیوں یا دو پہاڑوں کے بیچ میں کہ نہ اس میں خون بہایا جائے اور نہ اس میں لڑائی کے لیے ہتھیار اٹھایا جائے ، نہ اس میں کسی درخت کے پتے جھاڑے جائیں مگر صرف چارے کے لیے (کہ اس سے درخت کا چنداں نقصان نہیں ہوتا) (فرمایا) « اللَّہُمَّ بَارِكْ لَنَا فِى مَدِينَتِنَا اللَّہُمَّ بَارِكْ لَنَا فِى صَاعِنَا اللَّہُمَّ بَارِكْ لَنَا فِى مُدِّنَا اللَّہُمَّ بَارِكْ لَنَا فِى صَاعِنَا اللَّہُمَّ بَارِكْ لَنَا فِى مُدِّنَا اللَّہُمَّ بَارِكْ لَنَا فِى مَدِينَتِنَا اللَّہُمَّ اجْعَلْ مَعَ الْبَرَكَۃِ بَرَكَتَيْنِ » یا اللہ ! برکت دے ہمارے شہر میں ۔ یا اللہ ! برکت دے ہماری چوسی...
Terms matched: 4  -  Score: 391  -  10k
رواۃ الحدیث: ابو سعيد الخدري ( 3260 ) ، ابو سعيد المهري ( 204 ) ، يحيى بن ابي كثير الطائي ( 8208 ) ، علي بن المبارك الهنائي ( 5745 ) ، إسماعيل بن علية الاسدي ( 1003 ) ، زهير بن حرب الحرشي ( 3036 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابوسعید خدری ؓ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے دعا کی « اللَّہُمَّ بَارِكْ لَنَا فِى صَاعِنَا وَمُدِّنَا وَاجْعَلْ مَعَ الْبَرَكَۃِ بَرَكَتَيْنِ » کہ ” یا اللہ ! برکت دے ہمارے مد میں ، اور ہمارے صاع میں ، اور ایک برکت پر دو برکتیں اور عنایت فرما ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 391  -  2k


Search took 0.479 seconds