رواة الحدیث

نتائج
نتیجہ مطلوبہ تلاش لفظ / الفاظ: بشر آدم البصري 1864
کتاب/کتب میں: سنن ترمذی
4 رزلٹ جن میں تمام الفاظ آئے ہیں۔
رواۃ الحدیث: عبد الله بن عمر العدوي ( 4967 ) ، سالم بن عبد الله العدوي ( 3194 ) ، عبد الله بن عمر العدوي ( 4967 ) ، نافع مولى ابن عمر ( 7863 ) ، عبد الله بن عون المزني ( 4997 ) ، ازهر بن سعد الباهلي ( 523 ) ، بشر بن آدم البصري ( 1864 ) ، حدیث ۔۔۔ عبداللہ بن عمر ؓ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ” اے اللہ ! ہمارے شام میں برکت عطا فرما ، اے اللہ ! ہمارے یمن میں برکت عطا فرما “ ، لوگوں نے عرض کیا : اور ہمارے نجد میں ، آپ نے فرمایا : ” اے اللہ ! ہمارے شام میں برکت عطا فرما ، اور ہمارے یمن میں برکت عطا فرما “ ، لوگوں نے عرض کیا : اور ہمارے نجد میں ، آپ نے فرمایا : ” یہاں زلزلے اور فتنے ہیں ، اور اسی سے شیطان کی سینگ نکلے گی “ ، (یعنی شیطان کا لشکر اور اس کے مددگار نکلیں گے) ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : ۱- یہ حدیث اس سند سے یعنی ابن عون کی روایت سے حسن صحیح غریب ہے ، ۲- یہ حدیث بطریق : « سالم بن عبد اللہ بن عمر عن أبيہ عن النبي صلى اللہ عليہ وسلم » بھی آئی ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  3k
رواۃ الحدیث: ابو هريرة الدوسي ( 4396 ) ، ابو العالية الرياحي ( 2949 ) ، خالد بن دينار التميمي ( 2640 ) ، عبد الصمد بن عبد الوارث التميمي ( 4548 ) ، بشر بن آدم البصري ( 1864 ) ، حدیث ۔۔۔ ابوہریرہ ؓ کہتے ہیں کہ نبی اکرم ﷺ نے فرمایا : ” تم کس قبیلہ سے ہو ؟ “ میں نے عرض کیا : میں قبیلہ دوس کا ہوں ، آپ نے فرمایا : ” میں نہیں جانتا تھا کہ دوس میں کوئی ایسا آدمی بھی ہو گا جس میں خیر ہو گی “ ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : ۱- یہ حدیث حسن صحیح غریب ہے ، ۲- ابوخلدہ کا نام خالد بن دینار ہے اور ابوالعالیہ کا نام رفیع ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: زيد بن خالد الجهني ( 3137 ) ، عبد الرحمن بن ابي عمرة الانصاري ( 4279 ) ، خارجة بن زيد الانصاري ( 2607 ) ، عبد الله بن عمرو القرشي  ( 4985 ) ، ابو بكر بن عمرو الانصاري ( 133 ) ، ابي بن العباس الانصاري ( 394 ) ، زيد بن الحباب التميمي ( 3124 ) ، بشر بن آدم البصري ( 1864 ) ، حدیث ۔۔۔ زید بن خالد جہنی ؓ سے روایت ہے کہ انہوں نے رسول اللہ ﷺ کو فرماتے سنا : ” سب سے بہتر گواہ وہ ہے جو گواہی طلب کیے جانے سے پہلے اپنی گواہی کا فریضہ ادا کر دے “ ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : یہ حدیث اس سند سے حسن غریب ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: سعيد بن عبيد الله الثقفي ( 3370 ) ، إسرائيل بن يونس السبيعي ( 982 ) ، المغيرة بن شعبة الثقفي ( 1665 ) ، جبير بن حية الثقفي ( 2094 ) ، زياد بن جبير الثقفي ( 3077 ) ، سعيد بن عبيد الله الثقفي ( 3370 ) ، إسماعيل بن سعيد الثقفي ( 1026 ) ، بشر بن آدم البصري ( 1864 ) ، حدیث ۔۔۔ مغیرہ بن شعبہ ؓ کہتے ہیں کہ نبی اکرم ﷺ نے فرمایا : ” سواری والے جنازے کے پیچھے رہے ، پیدل چلنے والے جہاں چاہے رہے ، اور بچوں کی بھی نماز جنازہ پڑھی جائے گی “ ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : ۱- یہ حدیث حسن صحیح ہے ، ۲- اسرائیل اور دیگر کئی لوگوں نے اسے سعید بن عبداللہ سے روایت کیا ہے ، ۳- صحابہ کرام وغیرہم میں سے بعض اہل علم کا اسی پر عمل ہے ۔ یہ لوگ کہتے ہیں کہ بچے کی نماز جنازہ یہ جان لینے کے بعد کہ اس میں جان ڈال دی گئی تھی پڑھی جائے گی گو (ولادت کے وقت) وہ رویا نہ ہو ، احمد اور اسحاق بن راہویہ اسی کے قائل ہیں ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  3k


Search took 0.340 seconds