رواة الحدیث

نتائج
نتیجہ مطلوبہ تلاش لفظ / الفاظ: بشر عمر الزهراني 1885
تمام کتب میں:
31 رزلٹ جن میں تمام الفاظ آئے ہیں۔
رواۃ الحدیث: علي بن ابي طالب الهاشمي ( 5722 ) ، العباس بن عبد المطلب الهاشمي ( 4180 ) ، سعد بن ابي وقاص الزهري ( 3232 ) ، الزبير بن العوام الاسدي ( 1427 ) ، عبد الرحمن بن عوف الزهري ( 4461 ) ، عثمان بن عفان ( 5543 ) ، عمر بن الخطاب العدوي ( 5913 ) ، مالك بن اوس النصري ( 6660 ) ، محمد بن شهاب الزهري ( 7272 ) ، مالك بن انس الاصبحي ( 6659 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، محمد بن يحيى الذهلي ( 7323 ) ، الحسن بن علي الهذلي ( 1284 ) ، حدیث ۔۔۔ مالک بن اوس بن حدثان کہتے ہیں کہ عمر ؓ نے مجھے دن چڑھے بلوا بھیجا ، چنانچہ میں آیا تو انہیں ایک تخت پر جس پر کوئی چیز بچھی ہوئی نہیں تھی بیٹھا ہوا پایا ، جب میں ان کے پاس پہنچا تو مجھے دیکھ کر کہنے لگے : مالک ! تمہاری قوم کے کچھ لوگ میرے پاس آئے ہیں اور میں نے انہیں کچھ دینے کے لیے حکم دیا ہے تو تم ان میں تقسیم کر دو ، میں نے کہا : اگر اس کام کے لیے آپ کسی اور کو کہتے (تو اچھا رہتا) عمر ؓ نے کہا : نہیں تم (جو میں دے رہا ہوں) لے لو (اور ان میں تقسیم کر دو) اسی دوران یرفاء آ گیا ، اس نے کہا : امیر المؤمنین ! عثمان بن عفان ، عبدالرحمٰن بن عوف ، زبیر بن عوام اور سعد بن ابی وقاص ؓ آئے ہوئے ہیں اور ملنے کی اجازت چاہتے ہیں ، کیا انہیں بلا لوں ؟ عمر ؓ نے کہا : ہاں (بلا لو) اس نے انہیں اجازت دی ، وہ لوگ اندر آ گئے ، جب وہ اندر آ گئے ، تو یرفا پھر آیا ، اور آ کر کہنے لگا : امیر المؤمنین ! ابن عباس اور علی ؓ آنا چاہتے ہیں؛ اگر حکم ہو تو آنے دوں ؟ کہا : ہاں (آنے دو) اس نے انہیں بھی اجازت دے دی ، چنانچہ وہ بھی اندر آ گئے ، عباس ؓ نے کہا : امیر المؤمنین ! میرے اور ان کے (یعنی علی ؓ کے) درمیان (معاملے کا) فیصلہ کر دیجئیے ، (تاکہ جھگڑا ختم ہو) اس پر ان میں سے ایک شخص نے کہا : ہاں امیر المؤمنین ! ان دونوں کا فیصلہ کر دیجئیے اور انہیں راحت پہنچائیے ۔ مالک بن اوس کہتے ہیں کہ میرا گمان یہ ہے کہ ان دونوں ہی نے ان لوگوں (عثمان ، عبدالرحمٰن ، زبیر اور سعد بن ابی وقاص ؓ ) کو اپنے سے پہلے اسی مقصد سے بھیجا تھا (کہ وہ لوگ اس قضیہ کا فیصلہ کرانے میں مدد دیں) ۔ عمر ؓ نے کہا : اللہ ان پر رحم کرے ! تم دونوں صبر و سکون سے بیٹھو (میں ابھی فیصلہ کئے دیتا ہوں) پھر ان موجود صحابہ کی جماعت کی طرف متوجہ ہوئے اور ان سے کہا : میں تم سے اس اللہ کی قسم دے کر پوچھ...
Terms matched: 4  -  Score: 635  -  19k
رواۃ الحدیث: ابو بكر الصديق ( 4945 ) ، العباس بن عبد المطلب الهاشمي ( 4180 ) ، علي بن ابي طالب الهاشمي ( 5722 ) ، سعد بن ابي وقاص الزهري ( 3232 ) ، عبد الرحمن بن عوف الزهري ( 4461 ) ، الزبير بن العوام الاسدي ( 1427 ) ، عثمان بن عفان ( 5543 ) ، عمر بن الخطاب العدوي ( 5913 ) ، مالك بن اوس النصري ( 6660 ) ، محمد بن شهاب الزهري ( 7272 ) ، مالك بن انس الاصبحي ( 6659 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، الحسن بن علي الهذلي ( 1284 ) ، حدیث ۔۔۔ مالک بن اوس بن حدثان کہتے ہیں کہ میں عمر بن خطاب ؓ کے پاس گیا ، اسی دوران ان کے پاس عثمان بن عفان ، زبیر بن عوام ، عبدالرحمٰن بن عوف اور سعد بن ابی وقاص ؓ بھی پہنچے ، پھر علی اور عباس ؓ جھگڑتے ہوئے آئے ، عمر ؓ نے ان سے کہا : میں تم لوگوں کو اس اللہ کی قسم دیتا ہوں جس کے حکم سے آسمان و زمین قائم ہے ، تم لوگ جانتے ہو رسول اللہ ﷺ نے فرمایا ہے : ” ہمارا (یعنی انبیاء کا) کوئی وارث نہیں ہوتا ، جو کچھ ہم چھوڑتے ہیں وہ صدقہ ہوتا ہے “ ، لوگوں نے کہا : ہاں ! عمر ؓ نے کہا : جب رسول اللہ ﷺ وفات پا گئے ، ابوبکر ؓ نے کہا : میں رسول اللہ ﷺ کا جانشین ہوں ، پھر تم اپنے بھتیجے کی میراث میں سے اپنا حصہ طلب کرنے اور یہ اپنی بیوی کے باپ کی میراث طلب کرنے کے لیے ابوبکر ؓ کے پاس آئے ، ابوبکر ؓ نے کہا : بیشک رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ” ہمارا (یعنی انبیاء کا) کوئی وارث نہیں ہوتا ، ہم جو کچھ چھوڑتے ہیں وہ صدقہ ہوتا ہے “ ، (عمر ؓ نے کہا) اللہ خوب جانتا ہے ابوبکر سچے ، نیک ، بھلے اور حق کی پیروی کرنے والے تھے ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : اس حدیث میں تفصیل ہے ، یہ حدیث مالک بن اوس کی روایت سے حسن صحیح غریب ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 547  -  5k
رواۃ الحدیث: عبد الله بن العباس القرشي ( 4883 ) ، ابو العالية الرياحي ( 2949 ) ، قتادة بن دعامة السدوسي ( 6458 ) ، ابان بن يزيد العطار ( 18 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، زيد بن اخزم الطائي ( 3119 ) ، حدیث ۔۔۔ عبداللہ بن عباس ؓ سے روایت ہے کہ نبی اکرم ﷺ کے سامنے ایک آدمی نے ہوا پر لعنت بھیجی تو آپ نے فرمایا : ” ہوا پر لعنت نہ بھیجو اس لیے کہ وہ تو (اللہ کے) حکم کی پابند ہے ، اور جس شخص نے کسی ایسی چیز پر لعنت بھیجی جو لعنت کی مستحق نہیں ہے تو لعنت اسی پر لوٹ آتی ہے “ ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : ۱- یہ حدیث حسن غریب ہے ، ۲- بشر بن عمر کے علاوہ ہم کسی کو نہیں جانتے جس نے اسے مرفوعاً بیان کیا ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 396  -  2k
رواۃ الحدیث: عبد الله بن مسعود ( 5079 ) ، شقيق بن سلمة الاسدي ( 3825 ) ، سليمان بن مهران الاعمش ( 3629 ) ، شعبة بن الحجاج العتكي ( 3795 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، احمد بن سعيد الدارمي ( 446 ) ، حدیث ۔۔۔ مجھ سے احمد بن سعید نے بیان کیا ، کہا ہم سے بشر بن عمر نے بیان کیا ، ان سے شعبہ نے بیان کیا ، ان سے سلیمان نے ، ان سے ابووائل نے کہ عبداللہ بن مسعود ؓ نے « ہيت لك » پڑھا اور کہا کہ جس طرح ہمیں یہ لفظ سکھایا گیا ہے ۔ اسی طرح ہم پڑھتے ہیں ۔ « مثواہ‏ » یعنی اس کا ٹھکانا ، درجہ ۔ « ألفيا‏ » یعنی پایا اسی سے ہے ۔ « ألفوا آباءہم‏ » اور « ألفينا‏ » (دوسری آیتوں میں) اور ابن مسعود سے (سورۃ الصافات) میں « بل عجبت ويسخرون‏ » منقول ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 396  -  3k
رواۃ الحدیث: عبد الله بن عمر العدوي ( 4967 ) ، الحسن البصري ( 1239 ) ، يونس بن عبيد العبدي ( 8616 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، زيد بن اخزم الطائي ( 3119 ) ، حدیث ۔۔۔ عبداللہ بن عمر ؓ کہتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ” کسی گھونٹ پینے کا ثواب اللہ تعالیٰ کے یہاں اتنا زیادہ نہیں ہے جتنا اللہ تعالیٰ کی رضا کے لیے غصہ کا گھونٹ پینے کا ہے “ ۔
Terms matched: 4  -  Score: 396  -  2k
رواۃ الحدیث: عمر بن الخطاب العدوي ( 5913 ) ، النعمان بن بشير الانصاري ( 1733 ) ، سماك بن حرب الذهلي ( 3638 ) ، شعبة بن الحجاج العتكي ( 3795 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، نصر بن علي الازدي ( 7901 ) ، حدیث ۔۔۔ نعمان بن بشیر ؓ کہتے ہیں کہ میں نے عمر بن خطاب ؓ کو کہتے سنا کہ میں نے رسول اللہ ﷺ کو دیکھا کہ آپ دن میں بھوک سے کروٹیں بدلتے رہتے تھے ، آپ کو خراب اور ردی کھجور بھی نہ ملتی تھی جس سے اپنا پیٹ بھر لیتے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 396  -  2k
رواۃ الحدیث: جابر بن زيد الازدي ( 2063 ) ، قتادة بن دعامة السدوسي ( 6458 ) ، شعبة بن الحجاج العتكي ( 3795 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، عبد الله بن العباس القرشي ( 4883 ) ، جابر بن زيد الازدي ( 2063 ) ، قتادة بن دعامة السدوسي ( 6458 ) ، شعبة بن الحجاج العتكي ( 3795 ) ، يحيى بن سعيد القطان ( 8271 ) ، مسدد بن مسرهد الاسدي ( 7426 ) ، حدیث ۔۔۔ ہم سے مسدد نے بیان کیا ، کہا ہم سے یحییٰ نے بیان کیا ، ان سے شعبہ نے ، ان سے قتادہ نے ، ان سے جابر بن زید نے اور ان سے ابن عباس ؓ نے بیان کیا کہ نبی کریم ﷺ سے کہا گیا کہ آپ حمزہ ؓ کی بیٹی سے نکاح کیوں نہیں کر لیتے ؟ آپ ﷺ نے فرمایا کہ وہ میرے دودھ کے بھائی کی بیٹی ہے ۔ اور بشر بن عمر نے بیان کیا ، ان سے شعبہ نے بیان کیا ، انہوں نے قتادہ سے سنا اور انہوں نے اسی طرح جابر بن زید سے سنا ۔
Terms matched: 4  -  Score: 396  -  3k
رواۃ الحدیث: جابر بن عبد الله الانصاري ( 2069 ) ، ابو سلمة بن عبد الرحمن الزهري ( 4903 ) ، محمد بن شهاب الزهري ( 7272 ) ، مالك بن انس الاصبحي ( 6659 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، محمد بن المثنى العنزي ( 6861 ) ، محمد بن يحيى الذهلي ( 7323 ) ، حدیث ۔۔۔ جابر بن عبداللہ ؓ کہتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ” جس شخص کو عمر بھر کے لیے کوئی چیز دے دی گئی اور اس کے بعد اس کے آنے والوں کے لیے بھی کہہ دی گئی ہو تو وہ عمریٰ اس کے اور اس کی اولاد کے لیے ہے ، جس نے دیا ہے اسے واپس نہ ہو گی ، اس لیے کہ دینے والے نے اس انداز سے دیا ہے جس میں وراثت شروع ہو گئی ہے “ ۔
Terms matched: 4  -  Score: 344  -  2k
رواۃ الحدیث: اسم مبهم ( 1131 ) ، سهل بن ابي حثمة الانصاري ( 3665 ) ، ابو ليلى بن عبد الله الانصاري ( 321 ) ، مالك بن انس الاصبحي ( 6659 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، يحيى بن حكيم المقوم ( 8251 ) ، حدیث ۔۔۔ سہل بن ابی حثمہ ؓ اپنی قوم کے بزرگوں سے روایت کرتے ہیں کہ عبداللہ بن سہل اور محیصہ ؓ دونوں محتاجی کی وجہ سے جو ان کو لاحق تھی (روزگار کی تلاش میں) اس یہودی بستی خیبر کی طرف نکلے ، محیصہ ؓ کو خبر ملی کہ عبداللہ بن سہل ؓ قتل کر دئیے گئے ہیں ، اور انہیں خیبر کے ایک گڑھے یا چشمے میں ڈال دیا گیا ہے ، وہ یہودیوں کے پاس گئے ، اور کہا : اللہ کی قسم ، تم لوگوں نے ہی ان (عبداللہ بن سہل) کو قتل کیا ہے ، وہ قسم کھا کر کہنے لگے کہ ہم نے ان کا قتل نہیں کیا ہے ، اس کے بعد محیصہ ؓ خیبر سے واپس اپنی قوم کے پاس پہنچے ، اور ان سے اس کا ذکر کیا ، پھر وہ ، ان کے بڑے بھائی حویصہ ، اور عبدالرحمٰن بن سہل ؓ رسول اللہ ﷺ کے پاس آئے ، اور محیصہ ؓ جو کہ خیبر میں تھے بات کرنے بڑھے تو آپ ﷺ نے محیصہ ؓ سے فرمایا : ” بڑے کا لحاظ کرو “ آپ ﷺ کی مراد عمر میں بڑے سے تھی چنانچہ حویصہ ؓ نے گفتگو کی ، اور اس کے بعد محیصہ ؓ نے ، اس کے بعد رسول اللہ ﷺ نے فیصلہ فرمایا : ” یا تو یہود تمہارے آدمی کی دیت ادا کریں ورنہ اس کو اعلان جنگ سمجھیں “ اور یہود کو یہ بات لکھ کر بھیج دی ، انہوں نے بھی جواب لکھ بھیجا کہ اللہ کی قسم ، ہم نے ان کو قتل نہیں کیا ہے ، تو آپ ﷺ نے حویصہ ، محیصہ اور عبدالرحمٰن ؓ سے کہا : ” تم قسم کھا کر اپنے ساتھی کی دیت کے مستحق ہو سکتے ہو “ ، انہوں نے انکار کیا تو آپ ﷺ نے فرمایا : ” پھر یہود قسم کھا کر بری ہو جائیں گے “ وہ کہنے لگے : وہ تو مسلمان نہیں ہیں ، (کیا ان کی قسم کا اعتبار کیا جائے گا) آخر کار رسول اللہ ﷺ نے اپنے پاس سے عبداللہ بن سہل ؓ کی دیت ادا کی ، اور ان کے لیے سو اونٹنیاں بھیجیں جنہیں ان کے گھر میں داخل کر دیا گیا ۔ سہل ؓ کا کہنا ہے کہ ان میں سے ایک لال اونٹنی نے مجھے لات ماری ۔
Terms matched: 4  -  Score: 344  -  6k
رواۃ الحدیث: عائشة بنت ابي بكر الصديق ( 4049 ) ، علي زين العابدين ( 5739 ) ، عاصم بن عمر الانصاري ( 4076 ) ، محمد بن عبد الرحمن الاسدي ( 7076 ) ، عبد الله بن لهيعة الحضرمي ( 5033 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، عبد القدوس بن محمد البصري ( 4604 ) ، حدیث ۔۔۔ ام المؤمنین عائشہ ؓ کہتی ہیں کہ میں نے کبھی رسول اللہ ﷺ کو نہیں دیکھا کہ آپ نے کسی کو برا بھلا کہا ہو یا آپ کا کپڑا تہ کیا جاتا رہا ہو ۔
Terms matched: 4  -  Score: 344  -  2k
رواۃ الحدیث: عبد الله بن عمر العدوي ( 4967 ) ، اسلم العدوي ( 549 ) ، زيد بن اسلم القرشي ( 3122 ) ، هشام بن سعد القرشي ( 8047 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، محمد بن عمرو العتكي ( 7222 ) ، عبد الرحمن بن مهدي العنبري ( 4493 ) ، عمرو بن علي الفلاس ( 6171 ) ، حدیث ۔۔۔ ترجمہ وہی ہے جو اوپر گزرا ۔
Terms matched: 4  -  Score: 344  -  1k
رواۃ الحدیث: عائشة بنت ابي بكر الصديق ( 4049 ) ، ام محمد بن عبد الرحمن ( 676 ) ، محمد بن عبد الرحمن القرشي ( 7064 ) ، يزيد بن قسيط الليثي ( 8455 ) ، مالك بن انس الاصبحي ( 6659 ) ، عبد الرحمن بن القاسم العتقي ( 4311 ) ، الحارث بن مسكين الاموي ( 1219 ) ، مالك بن انس الاصبحي ( 6659 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، إسحاق بن راهويه المروزي ( 927 ) ، حدیث ۔۔۔ ام المؤمنین عائشہ ؓ کہتی ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے حکم دیا کہ مردار جانور کی کھال سے فائدہ اٹھایا جا سکتا ہے جب کہ وہ دباغت دی گئی ہو ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: عبد الله بن العباس القرشي ( 4883 ) ، عطاء بن ابي رباح القرشي ( 5625 ) ، عطاء بن ابي مسلم الخراساني ( 5627 ) ، شعيب بن رزيق المقدسي ( 3809 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، نصر بن علي الازدي ( 7901 ) ، حدیث ۔۔۔ عبداللہ بن عباس ؓ کہتے ہیں کہ میں نے رسول اللہ ﷺ کو فرماتے سنا : ” دو آنکھوں کو جہنم کی آگ نہیں چھوئے گی : ایک وہ آنکھ جو اللہ کے ڈر سے تر ہوئی ہو اور ایک وہ آنکھ جس نے راہ جہاد میں پہرہ دیتے ہوئے رات گزاری ہو “ ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : ۱- ابن عباس ؓ کی حدیث حسن غریب ہے ، ہم اسے صرف شعیب بن رزیق ہی کی روایت سے جانتے ہیں ، ۲- اس باب میں عثمان اور ابوریحانہ ؓ سے بھی احادیث آئی ہیں ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  3k
رواۃ الحدیث: انس بن مالك الانصاري ( 720 ) ، قتادة بن دعامة السدوسي ( 6458 ) ، شعبة بن الحجاج العتكي ( 3795 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، علي بن نصر الحداني ( 5821 ) ، نصر بن علي الازدي ( 7901 ) ، شعبة بن الحجاج العتكي ( 3795 ) ، يحيى بن سعيد القطان ( 8271 ) ، محمد بن بشار العبدي ( 6879 ) ، حدیث ۔۔۔ انس بن مالک ؓ کہتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ” اپنی صفیں برابر کرو ، اس لیے کہ صفوں کی برابری تکمیل نماز میں داخل ہے “ ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: علي بن ابي طالب الهاشمي ( 5722 ) ، عبد الله بن العباس القرشي ( 4883 ) ، الحصين بن جندب المذحجي ( 2393 ) ، سليمان بن مهران الاعمش ( 3629 ) ، علي بن ابي طالب الهاشمي ( 5722 ) ، الحصين بن جندب المذحجي ( 2393 ) ، عطاء بن السائب الثقفي ( 5629 ) ، علي بن ابي طالب الهاشمي ( 5722 ) ، الحسن البصري ( 1239 ) ، قتادة بن دعامة السدوسي ( 6458 ) ، همام بن يحيى العوذي ( 8097 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، محمد بن يحيى بن ابي حزم ( 7315 ) ، حدیث ۔۔۔ علی ؓ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ” تین طرح کے لوگ مرفوع القلم ہیں (یعنی قابل مواخذہ نہیں ہیں) : سونے والا جب تک کہ نیند سے بیدار نہ ہو جائے ، بچہ جب تک کہ بالغ نہ ہو جائے ، اور دیوانہ جب تک کہ سمجھ بوجھ والا نہ ہو جائے “ ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : ۱- اس سند سے علی ؓ کی حدیث حسن غریب ہے ، ۲- یہ حدیث کئی اور سندوں سے بھی علی ؓ سے مروی ہے ، وہ نبی اکرم ﷺ سے روایت کرتے ہیں ، ۳- بعض راویوں نے « وعن الغلام حتى يحتلم » کہا ہے ، یعنی بچہ جب تک بالغ نہ ہو جائے مرفوع القلم ہے ، ۴ - علی ؓ کے زمانے میں حسن بصری موجود تھے ، حسن نے ان کا زمانہ پایا ہے ، لیکن علی ؓ سے ان کے سماع کا ہمیں علم نہیں ہے ، ۵- یہ حدیث : عطاء بن سائب سے بھی مروی ہے انہوں نے یہ حدیث بطریق : « أبي ظبيان عن علي بن أبي طالب عن النبي صلى اللہ عليہ وسلم » اسی جیسی حدیث روایت کی ہے ، اور اعمش نے بطریق : « أبي ظبيان عن ابن عباس عن علي » موقوفاً روایت کیا ہے ، انہوں نے اسے مرفوع نہیں کیا ، ۶- اس باب میں عائشہ ؓ سے بھی روایت ہے ، ۷- اہل علم کا عمل اسی حدیث پر ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  5k
رواۃ الحدیث: انس بن مالك الانصاري ( 720 ) ، إسماعيل بن محمد الزهري ( 1056 ) ، عبد الله بن جعفر الزهري ( 4763 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، نصر بن علي الازدي ( 7901 ) ، حدیث ۔۔۔ انس بن مالک ؓ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ باہر نکلے تو کچھ لوگوں کو بیٹھ کر نماز پڑھتے ہوئے دیکھا ، تو آپ ﷺ نے فرمایا : ” بیٹھ کر پڑھنے والے کی نماز کھڑے ہو کر پڑھنے والے کی نماز کے مقابلے میں (ثواب میں) آدھی ہے “ ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: عائشة بنت ابي بكر الصديق ( 4049 ) ، عروة بن الزبير الاسدي ( 5594 ) ، محمد بن شهاب الزهري ( 7272 ) ، مالك بن انس الاصبحي ( 6659 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، محمد بن يحيى الذهلي ( 7323 ) ، معن بن عيسى القزاز ( 7643 ) ، سهل بن ابي سهل الرازي ( 3666 ) ، حدیث ۔۔۔ ام المؤمنین عائشہ ؓ سے روایت ہے کہ نبی اکرم ﷺ جب بیمار پڑے تو اپنے اوپر معوذات پڑھتے اور پھونک لیتے ، لیکن جب آپ کا مرض شدت اختیار کر گیا تو میں آپ ﷺ کے اوپر پڑھتی اور برکت کی امید سے آپ ہی کا ہاتھ آپ پر پھیرتی ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: علي بن ابي طالب الهاشمي ( 5722 ) ، محمد بن الحنفية الهاشمي ( 7185 ) ، الحسن بن الحنفية الهاشمي ( 1300 ) ، عبد الله بن الحنيفة الهاشمي ( 5063 ) ، محمد بن شهاب الزهري ( 7272 ) ، مالك بن انس الاصبحي ( 6659 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، محمد بن يحيى الذهلي ( 7323 ) ، حدیث ۔۔۔ علی بن ابی طالب ؓ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے خیبر کے دن عورتوں کے ساتھ متعہ کرنے سے ، اور پالتو گدھوں کے گوشت کھانے سے منع فرما دیا ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: ابو سعيد الخدري ( 3260 ) ، عطية بن سعد العوفي ( 5647 ) ، سعد الطائي ( 3226 ) ، سليمان بن مهران الاعمش ( 3629 ) ، محمد بن خازم الاعمى ( 6936 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، زيد بن اخزم الطائي ( 3119 ) ، حدیث ۔۔۔ ابو سعید خدری ؓ کہتے ہیں رسول اللہ ﷺ نے اس فرشتہ کا ذکر کیا جو صور لیے کھڑا ہے تو فرمایا : ” اس کے داہنی جانب جبرائل ہیں اور بائیں جانب میکائل ہیں “ ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: جبر بن عتيك الانصاري ( 2070 ) ، عبد الرحمن بن جابر الانصاري ( 4332 ) ، صخر بن إسحاق الغفاري ( 3909 ) ، ثابت بن قيس الغفاري ( 2025 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، محمد بن المثنى العنزي ( 6861 ) ، العباس بن عبد العظيم العنبري ( 4176 ) ، حدیث ۔۔۔ جابر بن عتیک ؓ کہتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ” قریب ہے کہ تم سے زکاۃ لینے کچھ ایسے لوگ آئیں جنہیں تم ناپسند کرو گے ، جب وہ آئیں تو انہیں مرحبا کہو اور وہ جسے چاہیں ، اسے لینے دو ، اگر انصاف کریں گے تو فائدہ انہیں کو ہو گا اور اگر ظلم کریں گے تو اس کا وبال بھی انہیں پر ہو گا ، لہٰذا تم ان کو خوش رکھو ، اس لیے کہ تمہاری زکاۃ اس وقت پوری ہو گی جب وہ خوش ہوں اور انہیں چاہیئے کہ تمہارے حق میں دعا کریں “ ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  3k
رواۃ الحدیث: ثور بن زيد الديلي ( 2057 ) ، سليمان بن بلال القرشي ( 3574 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، محمد بن مرزوق الباهلي ( 7261 ) ، حدیث ۔۔۔ ثور بن یزید دیلمی سے اسی سند کے ساتھ اسی طرح مروی ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  1k
رواۃ الحدیث: اسم مبهم ( 1131 ) ، سهل بن ابي حثمة الانصاري ( 3665 ) ، ابو ليلى بن عبد الله الانصاري ( 321 ) ، مالك بن انس الاصبحي ( 6659 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، إسحاق بن منصور الكوسج ( 970 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا سہل بن ابی حثمہ ؓ کو خبر دی اس کی قوم کے بڑے لوگوں نے کہ عبداللہ بن سہل اور محیصہ ؓ دونوں خیبر کی طرف گئے تکلیف کی وجہ سے جو ان پر آئی تو محیصہ سے کسی نے کہا : عبداللہ بن سہل مارے گئے اور ان کی نعش چشمہ یا کنواں میں پھینک دی ہے ۔ وہ یہود کے پاس آئے اور انہوں نے کہا : قسم اللہ کی تم نے اس کو مارا ہے ۔ یہودیوں نے کہا : قسم اللہ کی ہم نے اس کو نہیں مارا ۔ پھر وہ اپنی قوم کے پاس آئے اور ان سے بیان کیا ، پھر سیدنا محیصہ ؓ اور ان کا بھائی حویصہ ؓ جو اس سے بڑا تھا اور عبدالرحمٰن بن سہل ؓ تینوں آئے رسول اللہ ﷺ کے پاس ، محیصہ ؓ نے بات کرنا چاہیی وہی خیبر کو گیا تھا عبداللہ ؓ کے ساتھ تو رسول اللہ ﷺ نے فرمایا محیصہ ؓ سے ”بڑے کی بڑائی کر اور بڑے کو کہنے دے ۔ “ پھر حویصہ ؓ نے بات کی بعد اس کے محیصہ ؓ سے رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ”تو یہود تمہارے ساتھی کی دیت دیں یا جنگ کریں ۔ “ پھر آپ ﷺ نے یہود کو لکھا اس بارے میں ۔ انہوں نے جواب میں لکھا ، قسم اللہ کی ! ہم نے نہیں مارا اس کو تب رسول اللہ ﷺ نے حویصہ محیصہ اور عبدالرحمٰن ؓ سے فرمایا : ”تم قسم کھاتے ہو اور اپنے ساتھی کا خون لیتے ہو ۔ “ انہوں نے کہا : نہیں ، آپ ﷺ نے فرمایا : ”تو یہود قسم کھائیں گے تمہارے لیے ۔ “ انہوں نے کہا : وہ مسلمان نہیں ہیں ان کی قسم کیا کیا اعتبار ، پھر رسول اللہ ﷺ نے اس کی دیت اپنے پاس سے دی اور سو اونٹ ان کے پاس بھیجے یہاں تک کہ ان کے گھر میں گئے ۔ سیدنا سہل ؓ نے کہا : ان میں سے ایک سرخ اونٹنی نے مجھے لات ماری ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  6k
رواۃ الحدیث: قتادة بن دعامة السدوسي ( 6458 ) ، سعيد بن ابي عروبة العدوي ( 3281 ) ، علي بن مسهر القرشي ( 5816 ) ، ابن ابي شيبة العبسي ( 5049 ) ، شعبة بن الحجاج العتكي ( 3795 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، محمد بن يحيى بن ابي حزم ( 7315 ) ، يحيى بن سعيد القطان ( 8271 ) ، زهير بن حرب الحرشي ( 3036 ) ، حدیث ۔۔۔ مذکورہ بالا حدیث ایک اور سند سے بھی اسی طرح آئی ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: ابو هريرة الدوسي ( 4396 ) ، كيسان المقبري ( 6624 ) ، سعيد بن ابي سعيد المقبري ( 3280 ) ، مالك بن انس الاصبحي ( 6659 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، الحسن بن علي الهذلي ( 1284 ) ، حدیث ۔۔۔ ابوہریرہ ؓ کہتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ” کوئی عورت ایک دن اور ایک رات کی مسافت کا سفر محرم کے بغیر نہ کرے “ ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : یہ حدیث حسن صحیح ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: ابو هريرة الدوسي ( 4396 ) ، كيسان المقبري ( 6624 ) ، سعيد بن ابي سعيد المقبري ( 3280 ) ، مالك بن انس الاصبحي ( 6659 ) ، بشر بن عمر الزهراني ( 1885 ) ، الحسن بن علي الهذلي ( 1284 ) ، مالك بن انس الاصبحي ( 6659 ) ، عبد الله بن محمد القضاعي ( 5064 ) ، عبد الله بن مسلمة الحارثي ( 5085 ) ، حدیث ۔۔۔ ابوہریرہ ؓ سے روایت ہے کہ نبی اکرم ﷺ نے فرمایا : ” اللہ اور یوم آخرت پر ایمان رکھنے والی عورت کے لیے یہ حلال نہیں کہ وہ ایک دن اور ایک رات کا سفر کرے “ ۔ پھر انہوں نے اسی مفہوم کی حدیث ذکر کی جو اوپر گزری ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
Result Pages: 1 2 Next >>


Search took 0.505 seconds