رواة الحدیث

نتائج
نتیجہ مطلوبہ تلاش لفظ / الفاظ: بكر مضر القرشي 1940
کتاب/کتب میں: صحیح مسلم
12 رزلٹ جن میں تمام الفاظ آئے ہیں۔
رواۃ الحدیث: عبد الله بن العباس القرشي ( 4883 ) ، عبيد الله بن عبد الله الهذلي ( 5409 ) ، عراك بن مالك الغفاري ( 5582 ) ، جعفر بن ربيعة القرشي ( 2148 ) ، بكر بن مضر القرشي ( 1940 ) ، إسحاق بن بكر القرشي ( 937 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابن عباس ؓ سے بھی ایسے ہی روایت ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 500  -  1k
رواۃ الحدیث: عائشة بنت ابي بكر الصديق ( 4049 ) ، عروة بن الزبير الاسدي ( 5594 ) ، عراك بن مالك الغفاري ( 5582 ) ، جعفر بن ربيعة القرشي ( 2148 ) ، بكر بن مضر القرشي ( 1940 ) ، إسحاق بن بكر القرشي ( 937 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدہ عائشہ ؓ سے روایت ہے کہ ام حبیبہ بنت جحش جو عبدالرحمٰن بن عوف ؓ کے نکاح میں تھیں رسول اللہ ﷺ کے پاس آئیں اور شکایت کی خون بہنے کی ۔ آپ ﷺ نے فرمایا : ”اتنے دن ٹھہری رہ جتنے دنوں (اس بیماری سے پہلے) حیض آیا کرتا تھا پھر غسل کر ڈال ۔ “ تو وہ ہر نماز کے لئے غسل کیا کرتیں ۔
Terms matched: 4  -  Score: 500  -  2k
رواۃ الحدیث: يزيد بن الهاد الليثي ( 8452 ) ، بكر بن مضر القرشي ( 1940 ) ، عبد الله بن وهب القرشي ( 5147 ) ، احمد بن عمرو القرشي ( 477 ) ، حدیث ۔۔۔ بکر بن مضر کی ابن الھاد سے اس سند سے بھی روایت مروی ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 443  -  1k
رواۃ الحدیث: رافع بن خديج الانصاري ( 2865 ) ، عبد الله بن عمرو القرشي  ( 4985 ) ، ابو بكر بن عمرو الانصاري ( 133 ) ، يزيد بن الهاد الليثي ( 8452 ) ، بكر بن مضر القرشي ( 1940 ) ، قتيبة بن سعيد الثقفي ( 6460 ) ، حدیث ۔۔۔ رافع نے کہا کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ” ابراہیم علیہ السلام نے مکہ کو حرم قرار دیا اور میں دونوں کالے پتھروں والے میدانوں کے بیچ میں حرام قرار دیتا ہوں ۔ “ مراد آپ ﷺ کی مدینہ ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 396  -  2k
رواۃ الحدیث: ابو هريرة الدوسي ( 4396 ) ، عيسى بن طلحة القرشي ( 6313 ) ، محمد بن إبراهيم القرشي ( 6796 ) ، يزيد بن الهاد الليثي ( 8452 ) ، بكر بن مضر القرشي ( 1940 ) ، قتيبة بن سعيد الثقفي ( 6460 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابوہریرہ ؓ سے روایت ہے ، رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ” بندہ ایسی بات کہہ بیٹھتا ہے جس کی وجہ سے آگ میں اتنا اترتا جاتا ہے جیسے مشرق سے مغرب تک ۔ “ (جیسے کسی مسلمان کی شکایت یا مخبری حاکم وقت کے سامنے یا تہمت یا گالی یا کفر کا کلمہ اللہ یا رسول اللہ ﷺ یا قرآن یا شریعت کے ساتھ ۔ پس انسان کو چاہیے کہ زبان کو قابو میں رکھے بے ضرورت بات نہ کرے ۔)
Terms matched: 4  -  Score: 396  -  2k
رواۃ الحدیث: العباس بن عبد المطلب الهاشمي ( 4180 ) ، عامر بن سعد القرشي ( 4098 ) ، محمد بن إبراهيم القرشي ( 6796 ) ، يزيد بن الهاد الليثي ( 8452 ) ، بكر بن مضر القرشي ( 1940 ) ، قتيبة بن سعيد الثقفي ( 6460 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا عباس ؓ بیان کرتے ہیں کہ انہوں نے سنا رسول اللہ ﷺ سے ، آپ ﷺ فرماتے تھے : ” جب بندہ سجدہ کرتا ہے تو اس کے ساتھ سات کنارے سجدہ کرتے ہیں اس کا چہرہ اس کے دونوں ہاتھ اس کے دونوں گھٹنے اس کے دونوں پاؤں ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 396  -  2k
رواۃ الحدیث: عائشة بنت ابي بكر الصديق ( 4049 ) ، عراك بن مالك الغفاري ( 5582 ) ، زياد بن ميسرة المخزومي ( 3060 ) ، يزيد بن الهاد الليثي ( 8452 ) ، بكر بن مضر القرشي ( 1940 ) ، قتيبة بن سعيد الثقفي ( 6460 ) ، حدیث ۔۔۔ ام المؤمنین سیدہ عائشہ ؓ سے روایت ہے ایک فقیرنی میرے پاس آئی اپنی دونوں بیٹیوں کو لیے ہوئے ، میں نے اس کو تین کھجوریں دیں ۔ اس نے ہر ایک بیٹی کو ایک ایک کھجور دی اور تیسری کھجور کھانے کے لیے منہ سے لگائی اتنے میں اس کی بیٹیوں نے (وہ کھجور بھی مانگی کھانے کو) اس نے اس کھجور کے جس کو خود کھانا چاہتی تھی دو ٹکڑےکیے ان دونوں کے لیے ، مجھے یہ حال دیکھ کر تعجب ہوا ، میں نے جو اس نے کیا تھا رسول اللہ ﷺ سے بیان کیا ۔ آپ ﷺ نے فرمایا : ”اللہ تعالیٰ نے اس سبب سے اس کے لیے جنت واجب کر دی یا اس کو جہنم سے آزاد کر دیا ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 344  -  3k
رواۃ الحدیث: عقبة بن عامر الجهني ( 5672 ) ، ثمامة بن شفي الهمداني ( 2049 ) ، عمرو بن الحارث الانصاري ( 6080 ) ، بكر بن مضر القرشي ( 1940 ) ، الوليد بن مسلم القرشي ( 1807 ) ، داود بن رشيد الهاشمي ( 2783 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا عقبہ بن عامر ؓ نبی ﷺ سے مذکورہ حدیث کی مانند روایت نقل کرتے ہیں ۔
Terms matched: 4  -  Score: 344  -  2k
رواۃ الحدیث: سلمة بن الاكوع الاسلمي ( 3513 ) ، يزيد بن ابي عبيد الاسلمي ( 8376 ) ، بكير بن عبد الله القرشي ( 1951 ) ، عمرو بن الحارث الانصاري ( 6080 ) ، بكر بن مضر القرشي ( 1940 ) ، قتيبة بن سعيد الثقفي ( 6460 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا سلمہ بن الاکوع ؓ نے کہا : جب یہ آیت اتری « وَعَلَى الَّذِينَ يُطِيقُونَہُ فِدْيَۃٌ طَعَامُ مِسْكِينٍ » (۲ : البقرۃ : ۱۸۴) یعنی ” جن لوگوں کو طاقت ہے روزے کی ۔ وہ فدیہ دیں ہر روزہ کے بدلے ایک مسکین کو کھانا ۔ “ تو جو چاہتا تھا افطار کرتا تھا رمضان میں اور فدیہ دے دیتا تھا اور یہی حکم رہا یہاں تک کہ اس کے بعد والی آیت اتری اور اس نے آیت کو منسوخ کر دیا یعنی اب روزہ ضروری رکھنا ہوا طاقت والے کو اور فدیہ دینا درست نہیں ۔
Terms matched: 4  -  Score: 344  -  3k
رواۃ الحدیث: عبد الله بن مالك بن بحينة ( 5038 ) ، عبد الرحمن بن هرمز الاعرج ( 4506 ) ، جعفر بن ربيعة القرشي ( 2148 ) ، بكر بن مضر القرشي ( 1940 ) ، قتيبة بن سعيد الثقفي ( 6460 ) ، حدیث ۔۔۔ عبداللہ بن مالک ابن بحینہ سے روایت ہے (بحینہ عبداللہ کی ماں کا نام ہے ، مالک کی بی بی کا) رسول اللہ ﷺ جب نماز پڑھتے تو دونوں ہاتھوں کو (پہلوؤں سے) جدا رکھتے اتنا کہ آپ ﷺ کے بغلوں کی سفیدی دکھائی دیتی ۔
Terms matched: 4  -  Score: 344  -  2k
رواۃ الحدیث: ابو هريرة الدوسي ( 4396 ) ، ابو سلمة بن عبد الرحمن الزهري ( 4903 ) ، محمد بن إبراهيم القرشي ( 6796 ) ، يزيد بن الهاد الليثي ( 8452 ) ، بكر بن مضر القرشي ( 1940 ) ، قتيبة بن سعيد الثقفي ( 6460 ) ، الليث بن سعد الفهمي ( 6641 ) ، قتيبة بن سعيد الثقفي ( 6460 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابوہریرہ ؓ نے کہا کہ رسول اللہ ﷺ فرماتے تھے : ” بھلا دیکھو کہ اگر کسی کے دروازہ پر ایک نہر ہو کہ وہ اس میں ہر روز پانچ بار نہاتا ہو تو کیا اس کے بدن پر کچھ میل باقی رہے گا ۔ “ صحابہ ؓ نے عرض کیا کہ نہیں ۔ فرمایا : ” یہی مثال ہے پانچوں نمازوں کی کہ اللہ تعالیٰ اس کی برکت سے گناہوں کو صاف کر دیتا ہے ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 344  -  3k
رواۃ الحدیث: ابو سعيد الخدري ( 3260 ) ، ابو سلمة بن عبد الرحمن الزهري ( 4903 ) ، محمد بن إبراهيم القرشي ( 6796 ) ، يزيد بن الهاد الليثي ( 8452 ) ، بكر بن مضر القرشي ( 1940 ) ، قتيبة بن سعيد الثقفي ( 6460 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابوسعید خدری ؓ نے کہا : رسول اللہ ﷺ اعتکاف کرتے تھے ۔ مہینے کے بیچ کے دہے میں (یعنی رمضان کے) پھر جب بیس راتیں گزر جاتی تھیں رمضان کی اور اکیسویں آنے کو ہوتی تھی تو اپنے گھر لوٹ آتے تھے ۔ اور جو آپ ﷺ کے ساتھ معتکف ہوتے تھے وہ بھی لوٹ آتے تھے پھر ایک ماہ میں اسی طرح اعتکاف کیا اور جس رات میں گھر آنے کو تھے خطبہ پڑھا اور لوگوں کو حکم کیا جو منظور الہٰی تھا پھر فرمایا : ” میں اس عشرہ میں اعتکاف کرتا تھا پھر مجھے مناسب معلوم ہوا کہ میں اس عشرہ اخیر میں بھی اعتکاف کروں سو جو میرے ساتھ اعتکاف کرنے والا ہو وہ رات کو اپنے معتکف ہی میں رہے (اور گھر نہ جائے) اور میں نے خواب میں اس شب قدر کو دیکھا مگر بھلا دیا گیا سو اسے اخر کی دس راتوں میں ڈھونڈھو ہر طاق رات میں اور میں اپنے کو خواب میں دیکھتا ہوں کہ سجدہ کر رہا ہوں پانی اور کیچڑ میں ۔ “ (یعنی اس رات کے آخر میں ایسا ہو گا یہ بات خواب کی آپ ﷺ کو یاد رہی) پھر سیدنا ابوسعید خدری ؓ نے کہا کہ اکیسویں شب کہ ہم پر مینہ برسا اور مسجد رسول اللہ ﷺ کے مصلیٰ پر ٹپکی اور میں نے آپ ﷺ کو دیکھا جب آپ ﷺ نے صبح کی نماز سے سلام پھیرا کہ آپ ﷺ کے مبارک چہرے میں کیچڑ اور پانی بھرا ہوا تھا ۔
Terms matched: 4  -  Score: 344  -  5k


Search took 0.452 seconds