رواة الحدیث

نتائج
نتیجہ مطلوبہ تلاش لفظ / الفاظ: بلال رباح الحبشي 1963
کتاب/کتب میں: صحیح بخاری
3 رزلٹ جن میں تمام الفاظ آئے ہیں۔
رواۃ الحدیث: مالك بن انس الاصبحي ( 6659 ) ، إسماعيل بن ابي اويس الاصبحي ( 1040 ) ، بلال بن رباح الحبشي ( 1963 ) ، عبد الله بن عمر العدوي ( 4967 ) ، نافع مولى ابن عمر ( 7863 ) ، مالك بن انس الاصبحي ( 6659 ) ، عبد الله بن يوسف الكلاعي ( 5175 ) ، حدیث ۔۔۔ ہم سے عبداللہ بن یوسف تنیسی نے بیان کیا ، کہا ہمیں امام مالک بن انس نے خبر دی نافع سے ، انہوں نے عبداللہ بن عمر ؓ سے کہ نبی کریم ﷺ کعبہ کے اندر تشریف لے گئے اور اسامہ بن زید ، بلال اور عثمان بن طلحہ حجبی بھی آپ ﷺ کے ساتھ تھے ۔ پھر عثمان ؓ نے کعبہ کا دروازہ بند کر دیا ۔ اور آپ ﷺ اس میں ٹھہرے رہے ۔ جب آپ ﷺ باہر نکلے تو میں نے بلال ؓ سے پوچھا کہ نبی کریم ﷺ نے اندر کیا کیا ؟ انہوں نے کہا کہ آپ نے ایک ستون کو تو بائیں طرف چھوڑا اور ایک کو دائیں طرف اور تین کو پیچھے اور اس زمانہ میں خانہ کعبہ میں چھ ستون تھے ۔ پھر آپ ﷺ نے نماز پڑھی ۔ امام بخاری رحمہ اللہ نے کہا کہ ہم سے اسماعیل بن ابی ادریس نے کہا ، وہ کہتے ہیں کہ مجھ سے امام مالک نے یہ حدیث یوں بیان کی کہ آپ ﷺ نے اپنے دائیں طرف دو ستون چھوڑے تھے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 396  -  4k
رواۃ الحدیث: بلال بن رباح الحبشي ( 1963 ) ، عبد الله بن عمر العدوي ( 4967 ) ، مجاهد بن جبر القرشي ( 6715 ) ، سيف بن ابي سليمان المخزومي ( 3735 ) ، يحيى بن سعيد القطان ( 8271 ) ، مسدد بن مسرهد الاسدي ( 7426 ) ، حدیث ۔۔۔ ہم سے مسدد بن مسرہد نے بیان کیا ، کہا ہم سے یحییٰ بن سعید قطان نے بیان کیا سیف ابن ابی سلیمان سے ، انہوں نے کہا میں نے مجاہد سے سنا ، انہوں نے کہا کہ ابن عمر ؓ کی خدمت میں ایک آدمی آیا اور کہنے لگا ، اے لو یہ رسول اللہ ﷺ آن پہنچے اور آپ کعبہ کے اندر داخل ہو گئے ۔ ابن عمر ؓ نے کہا کہ میں جب آیا تو نبی کریم ﷺ کعبہ سے نکل چکے تھے ، میں نے دیکھا کہ بلال دونوں دروازوں کے سامنے کھڑے ہیں ۔ میں نے بلال سے پوچھا کہ کیا نبی کریم ﷺ نے کعبہ کے اندر نماز پڑھی ہے ؟ انہوں نے کہا کہ ہاں ! دو رکعت ان دو ستونوں کے درمیان پڑھی تھیں ، جو کعبہ میں داخل ہوتے وقت بائیں طرف واقع ہیں ۔ پھر جب باہر تشریف لائے تو کعبہ کے سامنے دو رکعت نماز ادا فرمائی ۔
Terms matched: 4  -  Score: 391  -  3k
رواۃ الحدیث: بلال بن رباح الحبشي ( 1963 ) ، قيس بن ابي حازم البجلي ( 6508 ) ، إسماعيل بن ابي خالد البجلي ( 989 ) ، محمد بن عبيد الطنافسي ( 7148 ) ، محمد بن نمير الهمداني ( 7136 ) ، حدیث ۔۔۔ ہم سے ابن نمیر نے بیان کیا ، ان سے محمد بن عبید نے کہا ، ہم سے اسماعیل نے بیان کیا ، اور ان سے قیس نے کہ بلال ؓ نے ابوبکر ؓ سے کہا : اگر آپ نے مجھے اپنے لیے خریدا ہے تو پھر اپنے پاس ہی رکھئے اور اگر اللہ کے لیے خریدا ہے تو پھر مجھے آزاد کر دیجئیے اور اللہ کے راستے میں عمل کرنے دیجئیے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 381  -  2k


Search took 0.399 seconds