رواة الحدیث

نتائج
نتیجہ مطلوبہ تلاش لفظ / الفاظ: بهز اسد العمي 1973
تمام کتب میں:
108 رزلٹ جن میں تمام الفاظ آئے ہیں۔
رواۃ الحدیث: انس بن مالك الانصاري ( 720 ) ، هشام بن زيد الانصاري ( 8046 ) ، شعبة بن الحجاج العتكي ( 3795 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، يعقوب بن إبراهيم العبدي ( 8514 ) ، حدیث ۔۔۔ ہم سے یعقوب بن ابراہیم بن کثیر نے بیان کیا ، کہا ہم سے بہز بن اسد نے بیان کیا ، کہا ہم سے شعبہ نے بیان کیا ، کہا کہ مجھے ہشام بن زید نے خبر دی ، کہا کہ میں نے انس بن مالک ؓ سے سنا انہوں نے کہا کہ انصار کی ایک عورت نبی کریم ﷺ کی خدمت میں حاضر ہوئیں ۔ ان کے ساتھ ایک ان کا بچہ بھی تھا ۔ آپ ﷺ نے ان سے کلام کیا پھر فرمایا : اس ذات کی قسم ! جس کے ہاتھ میں میری جان ہے ۔ تم لوگ مجھے سب سے زیادہ محبوب ہو دو مرتبہ آپ ﷺ نے یہ جملہ فرمایا ۔ ... حدیث متعلقہ ابواب: انصاریوں سے محمد صلی اللہ علیہ وسلم کی چاہت کا اظہار ۔
Terms matched: 4  -  Score: 344  -  3k
رواۃ الحدیث: عبد الله بن مالك بن بحينة ( 5038 ) ، حفص بن عاصم العدوي ( 2428 ) ، سعد بن إبراهيم القرشي ( 3236 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، عبد الله بن مالك بن بحينة ( 5038 ) ، حفص بن عاصم العدوي ( 2428 ) ، سعد بن إبراهيم القرشي ( 3236 ) ، ابن إسحاق القرشي ( 6811 ) ، شعبة بن الحجاج العتكي ( 3795 ) ، معاذ بن معاذ العنبري ( 7561 ) ، محمد بن جعفر الهذلي ( 6904 ) ، عبد الله بن مالك بن بحينة ( 5038 ) ، حفص بن عاصم العدوي ( 2428 ) ، سعد بن إبراهيم القرشي ( 3236 ) ، شعبة بن الحجاج العتكي ( 3795 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، عبد الرحمن بن بشر العبدي ( 4321 ) ، عبد الله بن مالك بن بحينة ( 5038 ) ، حفص بن عاصم العدوي ( 2428 ) ، سعد بن إبراهيم القرشي ( 3236 ) ، إبراهيم بن سعد الزهري ( 823 ) ، عبد العزيز بن عبد الله الاويسي ( 4581 ) ، حدیث ۔۔۔ ہم سے عبدالعزیز بن عبداللہ نے بیان کیا ، کہا کہ ہم سے ابراہیم بن سعد نے اپنے باپ سعد بن ابراہیم سے بیان کیا ، انہوں نے حفص بن عاصم سے ، انہوں نے عبداللہ بن مالک بن بحینہ سے ، کہا کہ نبی کریم ﷺ کا گزر ایک شخص پر ہوا (دوسری سند) امام بخاری رحمہ اللہ نے کہا کہ مجھ سے عبدالرحمٰن بن بشر نے بیان کیا ، کہا کہ ہم سے بہز بن اسد نے بیان کیا ۔ کہا کہ ہم سے شعبہ نے بیان کیا ، کہا کہ مجھے سعد بن ابراہیم نے خبر دی ، کہا کہ میں نے حفص بن عاصم سے سنا ، کہا کہ میں نے قبیلہ ازد کے ایک صاحب سے جن کا نام مالک بن بحینہ ؓ تھا ، سنا کہ رسول اللہ ﷺ کی نظر ایک ایسے نمازی پر پڑی جو تکبیر کے بعد دو رکعت نماز پڑھ رہا تھا ۔ نبی کریم ﷺ جب نماز سے فارغ ہو گئے تو لوگ اس شخص کے اردگرد جمع ہو گئے اور نبی کریم ﷺ نے فرمایا کیا صبح کی چار رکعتیں پڑھتا ہے ؟ کیا صبح کی چار رکعتیں ہو گئیں ؟ اس حدیث کی متابعت غندر اور معاذ نے شعبہ سے کی ہے جو مالک سے روایت کرتے ہیں ۔ ابن اسحاق نے سعد سے ، انہوں نے حفص سے ، وہ عبداللہ بن بحینہ سے اور حماد نے کہا کہ ہمیں سعد نے حفص کے واسطہ سے خبر دی اور وہ مالک کے واسطہ سے ۔ ... حدیث متعلقہ ابواب: بعد اقامت فرض کے علاوہ کوئی نماز نہیں ۔
Terms matched: 4  -  Score: 344  -  6k
رواۃ الحدیث: ابو ايوب الانصاري ( 2650 ) ، موسى بن طلحة القرشي ( 7744 ) ، عثمان بن عبد الله التميمي ( 5537 ) ، عمرو بن عثمان القرشي ( 6166 ) ، شعبة بن الحجاج العتكي ( 3795 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، عبد الرحمن بن بشر العبدي ( 4321 ) ، حدیث ۔۔۔ (دوسری سند) امام بخاری رحمہ اللہ نے کہا کہ مجھ سے عبدالرحمٰن بن بشر نے بیان کیا ، ان سے بہز بن اسد بصریٰ نے بیان کیا ، ان سے شعبہ نے بیان کیا ، ان سے ابن عثمان بن عبداللہ بن موہب اور ان کے والد عثمان بن عبداللہ نے بیان کیا کہ انہوں نے موسیٰ بن طلحہ سے سنا اور انہوں نے ابوایوب انصاری ؓ سے کہ ایک صاحب نے کہا : یا رسول اللہ ! کوئی ایسا عمل بتائیں جو مجھے جنت میں لے جائے ۔ اس پر لوگوں نے کہا کہ اسے کیا ہو گیا ہے ، اسے کیا ہو گیا ہے ۔ نبی کریم ﷺ نے فرمایا کہ کیوں ہو کیا گیا ہے ؟ اجی اس کو ضرورت ہے بیچارہ اس لیے پوچھتا ہے ۔ اس کے بعد آپ ﷺ نے ان سے فرمایا کہ اللہ کی عبادت کر اور اس کے ساتھ کسی اور کو شریک نہ کر ، نماز قائم کر ، زکوٰۃ دیتے رہو اور صلہ رحمی کرتے رہو ۔ (بس یہ اعمال تجھ کو جنت میں لے جائیں گے) چل اب نکیل چھوڑ دے ۔ راوی نے کہا شاید اس وقت نبی کریم ﷺ اپنی اونٹنی پر سوار تھے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 344  -  4k
رواۃ الحدیث: زيد بن ثابت الانصاري ( 3131 ) ، بسر بن سعيد الحضرمي ( 1848 ) ، سالم بن ابي امية القرشي ( 3181 ) ، موسى بن عقبة القرشي ( 7756 ) ، وهيب بن خالد الباهلي ( 8186 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا زید بن ثابت ؓ نے کہا کہ نبی ﷺ نے بورئیے سے مسجد میں ایک حجرہ بنایا اور نبی ﷺ نے اس میں کئی رات نماز پڑھی یہاں تک کہ لوگ جمع ہوئے اور ذکر کی حدیث سابق کے مانند اور اس میں یہ زیادہ کیا کہ ” اگر فرض ہو جاتی تم پر یہ نماز تو تم اس کو ادا نہ کر سکتے ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 316  -  2k
رواۃ الحدیث: انس بن مالك الانصاري ( 720 ) ، ثابت بن اسلم البناني ( 2009 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن نافع القيسي ( 6786 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا انس ؓ سے روایت ہے رسول اللہ ﷺ میرے پاس تشریف لائے اور میں لڑکوں کے ساتھ کھیل رہا تھا ۔ آپ ﷺ نے ہم کو سلام کیا ، پھر مجھے کسی کام کے لیے بھیجا ، میں اپنی ماں کے پاس دیر سے گیا ، تو میری ماں نے کہا : تو نے کیوں دیر کی ؟ میں نے کہا : رسول اللہ ﷺ نے مجھے ایک کام کے لیے بھیجا تھا ۔ وہ بولی : کیا کام تھا ؟ میں نے کہا : وہ بھید ہے . میری ماں بولی : رسول اللہ ﷺ کا بھید کسی سے نہ کہنا ۔ سیدنا انس ؓ نے کہا : اللہ کی قسم ! اگر وہ بھید میں کسی سے کہتا تو اے ثابت تجھ سے کہتا ۔
Terms matched: 4  -  Score: 316  -  3k
رواۃ الحدیث: وهب بن وهب السوائي ( 8175 ) ، عون بن ابي جحيفة السوائي ( 6261 ) ، عمر بن ابي زائدة الهمداني ( 5897 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ عون بن ابی حجیفہ سے روایت ہے کہ ان کے باپ نے رسول اللہ ﷺ کو چمڑے کے سرخ شامیانے میں دیکھا اور میں نے بلال ؓ کو دیکھا کہ انہوں نے رسول اللہ ﷺ کے وضو کا بچا ہوا پانی نکالا تو لوگ اس کو لینے کے لئے جھپٹنے لگے پھر جس کو پانی مل گیا اس نے بدن پر مل لیا اور جس کو نہ ملا اس نے اپنے ساتھی کے ہاتھ سے ہاتھ تر کر لیا پھر میں نے بلال ؓ کو دیکھا ۔ انہوں نے برچھا نکالا اور اس کو گاڑ دیا اور رسول اللہ ﷺ سرخ جوڑا پہنے ہوئے اس کو (پنڈلیوں تک) اٹھائے ہوئے نکلے اور برچھے کی طرف کھڑے ہو کر لوگوں کے ساتھ دو رکعتیں پڑھیں اور میں نے آدمیوں کو اور جانوروں کو دیکھا کہ وہ برچھے کے سامنے سے گزر رہے تھے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 316  -  4k
رواۃ الحدیث: ابو هريرة الدوسي ( 4396 ) ، طاوس بن كيسان اليماني ( 4002 ) ، عبد الله بن طاوس اليماني ( 4871 ) ، وهيب بن خالد الباهلي ( 8186 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابوہریرہ ؓ نے کہا کہ نبی ﷺ نے فرمایا : ” اللہ کا حق ہے ہر مسلمان پر کہ ہر ہفتہ میں ایک بار نہائے اور اپنا سر اور بدن دھوئے ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 302  -  2k
رواۃ الحدیث: ابو هريرة الدوسي ( 4396 ) ، طاوس بن كيسان اليماني ( 4002 ) ، عبد الله بن طاوس اليماني ( 4871 ) ، وهيب بن خالد الباهلي ( 8186 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، احمد بن إسحاق الحضرمي ( 410 ) ، زهير بن حرب الحرشي ( 3036 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابوہریرہ ؓ سے روایت ہے ، رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ”لوگ تین گروہوں پر اکٹھا کیے جائیں گے (یہ وہ حشر ہے جو قیامت سے پہلے دنیا ہی میں ہو گا اور یہ سب نشانیوں کے بعد آخری نشانی ہے) بعض خوش ہوں گے ، بعض ڈرتے ہوں گے ۔ دو ایک اونٹ پر ہوں گے ، تین ایک اونٹ پر ہوں گے ۔ چار ایک اونٹ پر ہوں گے ۔ دس ایک اونٹ پر ہوں گے اور باقی لوگوں کو آگ جمع کرے گی جب وہ رات کو ٹھہریں گے تو آگ بھی ٹھہر جائے گی اسی طرح جب دوپہر کو سوئیں گے تب آگ بھی ٹھہر جائے گی اور جہاں وہ صبح کو پہنچیں گے آگ بھی صبح کرے گی جہاں وہ شام کو پہنچیں گے آگ بھی شام کرے گی ۔ “ (غرض کہ سب لوگوں کو ہانک کر شام کے ملک کو لے جائے گی) ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  3k
رواۃ الحدیث: ابو هريرة الدوسي ( 4396 ) ، عبد الله بن رباح الانصاري ( 4802 ) ، ثابت بن اسلم البناني ( 2009 ) ، سليمان بن المغيرة القيسي ( 3570 ) ، هاشم بن القاسم الليثي ( 7996 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، احمد بن حنبل الشيباني ( 488 ) ، حدیث ۔۔۔ ابوہریرہ ؓ کہتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ آئے اور مکہ میں داخل ہوئے تو پہلے رسول اللہ ﷺ حجر اسود کے پاس آئے اور اس کا بوسہ لیا ، پھر بیت اللہ کا طواف کیا ، پھر صفا کی طرف آئے اور اس پر چڑھے جہاں سے بیت اللہ کو دیکھ رہے تھے ، پھر اپنے دونوں ہاتھ اٹھا کر اللہ تعالیٰ کا ذکر کرنے لگے اور اس کا ذکر کرتے رہے اور اس سے دعا کرتے رہے جتنی دیر تک اللہ نے چاہا ، راوی کہتے ہیں : اور انصار آپ کے نیچے تھے ، ہاشم کہتے ہیں : پھر آپ ﷺ نے دعا کی اور اللہ کی حمد بیان کی اور جو دعا کرنا چاہتے تھے کی ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  3k
رواۃ الحدیث: عائشة بنت ابي بكر الصديق ( 4049 ) ، ابو سلمة بن عبد الرحمن الزهري ( 4903 ) ، موسى بن عقبة القرشي ( 7756 ) ، وهيب بن خالد الباهلي ( 8186 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، موسى بن عقبة القرشي ( 7756 ) ، عبد العزيز بن محمد الدراوردي ( 4591 ) ، إسحاق بن راهويه المروزي ( 927 ) ، حدیث ۔۔۔ ام المؤمنین سیدہ عائشہ ؓ سے روایت ہے ، وہ کہتی تھیں : رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ” میانہ روی کرو اور جو میانہ روی نہ ہو سکے تو اس کے نزدیک رہو اور خوش رہو اس لیے کہ کسی کو اس کا عمل جنت میں نہ لے جائے گا ۔ “ لوگوں نے عرض کیا : یا رسول اللہ اور نہ آپ کو ؟ آپ ﷺ نے فرمایا : ”نہ مجھ کو مگر یہ کہ اللہ تعالیٰ ڈھانپ لے مجھ کو اپنی رحمت سے اور جان لو کہ بہت پسند اللہ کو وہ عمل ہے جو ہمیشہ کیا جائے اگرچہ تھوڑا ہو ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  3k
رواۃ الحدیث: ابو هريرة الدوسي ( 4396 ) ، ابو صالح السمان ( 2840 ) ، سهيل بن ابي صالح السمان ( 3687 ) ، وهيب بن خالد الباهلي ( 8186 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابوہریرہ ؓ سے روایت ہے ، رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ”جب تم میں سے کوئی کھانا کھائے تو اپنی انگلیاں چاٹ لے ۔ کیونکہ اس کو معلوم نہیں کون سی انگلی میں برکت ہے ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: انس بن مالك الانصاري ( 720 ) ، ثابت بن اسلم البناني ( 2009 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن خلاد الباهلي ( 6949 ) ، حدیث ۔۔۔ انس ؓ کہتے ہیں دحیہ کلبی ؓ کے حصے میں ایک خوبصورت لونڈی آئی تو رسول اللہ ﷺ نے انہیں سات غلام دے کر خرید لیا اور انہیں ام سلیم ؓ کے حوالے کر دیا کہ انہیں بنا سنوار دیں ۔ حماد کہتے ہیں : میں سمجھتا ہوں کہ آپ ﷺ نے ام المؤمنین صفیہ بنت حیی ؓ کو ام سلیم ؓ کے حوالے کر دیا کہ وہ وہاں عدت گزار کر پاک و صاف ہو لیں ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: ابو هريرة الدوسي ( 4396 ) ، طريف بن مجالد السلي ( 4007 ) ، حكيم البصري ( 2459 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، عبد الرحمن بن مهدي العنبري ( 4493 ) ، يحيى بن سعيد القطان ( 8271 ) ، محمد بن بشار العبدي ( 6879 ) ، حدیث ۔۔۔ ابوہریرہ ؓ سے روایت ہے کہ نبی اکرم ﷺ نے فرمایا : ” جو کسی حائضہ کے پاس آیا یعنی اس سے جماع کیا یا کسی عورت کے پاس پیچھے کے راستے سے آیا ، یا کسی کاہن نجومی کے پاس (غیب کا حال جاننے کے لیے) آیا تو اس نے ان چیزوں کا انکار کیا جو محمد ( ﷺ ) پر نازل کی گئی ہیں “ ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : ۱- اہل علم کے نزدیک نبی اکرم ﷺ کے اس فرمان کا مطلب تغلیظ ہے ، نبی اکرم ﷺ سے یہ بھی مروی ہے کہ آپ نے فرمایا : ” جس نے کسی حائضہ سے صحبت کی تو وہ ایک دینار صدقہ کرے ، اگر حائضہ سے صحبت کا ارتکاب کفر ہوتا تو اس میں کفارے کا حکم نہ دیا جاتا “ ، ۲- محمد بن اسماعیل بخاری نے اس حدیث کو سنداً ضعیف قرار دیا ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  3k
رواۃ الحدیث: علي بن ابي طالب الهاشمي ( 5722 ) ، النزال بن سبرة الهلالي ( 1710 ) ، عبد الملك بن ميسرة العامري ( 5248 ) ، شعبة بن الحجاج العتكي ( 3795 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، عمرو بن يزيد الجرمي ( 6222 ) ، حدیث ۔۔۔ عبدالملک بن میسرہ کہتے ہیں کہ میں نے نزال بن سبرہ سے سنا ، انہوں نے کہا کہ میں نے علی ؓ کو دیکھا کہ آپ نے ظہر کی نماز پڑھی ، پھر لوگوں کی ضرورتیں پوری کرنے یعنی ان کے مقدمات نپٹانے کے لیے بیٹھے ، جب عصر کا وقت ہوا تو پانی کا ایک برتن لایا گیا ، آپ نے اس سے ایک ہتھیلی میں پانی لیا ، پھر اسے اپنے چہرہ ، اپنے دونوں بازو ، سر اور دونوں پیروں پر ملا ، پھر بچا ہوا پانی لیا اور کھڑے ہو کر پیا ، اور کہنے لگے کہ کچھ لوگ اسے ناپسند کرتے ہیں حالانکہ میں نے رسول اللہ ﷺ کو ایسا کرتے دیکھا ہے ، اور یہ ان لوگوں کا وضو ہے جن کا وضو نہیں ٹوٹا ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  3k
رواۃ الحدیث: حذيفة بن اليمان العبسي ( 2324 ) ، شقيق بن سلمة الاسدي ( 3825 ) ، منصور بن المعتمر السلمي ( 7673 ) ، سليمان بن مهران الاعمش ( 3629 ) ، شعبة بن الحجاج العتكي ( 3795 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، سليمان بن عبيد الله الغيلاني ( 3610 ) ، حدیث ۔۔۔ حذیفہ ؓ سے روایت ہے کہ نبی اکرم ﷺ لوگوں کے ایک کوڑا خانہ پر چل کر آئے تو آپ نے کھڑے ہو کر پیشاب کیا ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: انس بن مالك الانصاري ( 720 ) ، ثابت بن اسلم البناني ( 2009 ) ، عبد الله بن العباس القرشي ( 4883 ) ، عمار بن ابي عمار الهاشمي ( 5847 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن خلاد الباهلي ( 6949 ) ، حدیث ۔۔۔ انس ؓ سے روایت ہے کہ نبی اکرم ﷺ کھجور کے ایک تنے کے سہارے خطبہ دیتے تھے ، جب منبر تیار ہو گیا تو آپ منبر کی طرف چلے ، وہ تنا رونے لگا تو آپ نے اسے اپنے گود میں لے لیا ، تو وہ خاموش ہو گیا ، آپ ﷺ نے فرمایا : ” اگر میں اسے گود میں نہ لیتا تو وہ قیامت تک روتا رہتا “ ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: علي بن ابي طالب الهاشمي ( 5722 ) ، عبد الرحمن بن الحارث القرشي ( 4304 ) ، هشام بن عمرو الفزاري ( 8057 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، حفص بن عمرو الربالي ( 2446 ) ، حدیث ۔۔۔ علی بن ابی طالب ؓ سے روایت ہے کہ نبی اکرم ﷺ وتر کے آخر میں یہ دعا پڑھتے تھے : « اللہم إني أعوذ برضاك من سخطك وأعوذ بمعافاتك من عقوبتك وأعوذ بك منك لا أحصي ثناء عليك أنت كما أثنيت على نفسك »   ” اے اللہ ! میں تیری رضا مندی کے ذریعہ تیری ناراضی سے پناہ مانگتا ہوں ، اور تیری معافی کے ذریعہ تیری سزاؤں سے پناہ مانگتا ہوں ، اور تیرے رحم و کرم کے ذریعہ تیرے غیظ و غضب سے پناہ مانگتا ہوں ، میں تیری حمد و ثنا کو شمار نہیں کر سکتا ، تو ویسا ہی ہے جیسا کہ تو نے خود اپنی تعریف کی ہے “ ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  3k
رواۃ الحدیث: عبد الله بن العباس القرشي ( 4883 ) ، ابو العالية الرياحي ( 2949 ) ، يوسف بن عبد الله الانصاري ( 8579 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابن عباس ؓ نے کہا : رسول اللہ ﷺ کو جب کوئی بڑا کام پیش آتا تو یہی دعا پڑھتے اس میں اتنا زیادہ ہے « لاَ إِلَہَ إِلاَّ اللَّہُ رَبُّ الْعَرْشِ الْكَرِيمِ » ۔ باب : سبحان اللہ وبحمدہ کی فضیلت
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: انس بن مالك الانصاري ( 720 ) ، شعيب بن الحبحاب الازدي ( 3804 ) ، هارون بن موسى الاعور ( 7989 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن نافع القيسي ( 6786 ) ، حدیث ۔۔۔ ترجمہ وہی ہے جو اوپر گزرا ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  1k
رواۃ الحدیث: انس بن مالك الانصاري ( 720 ) ، ثابت بن اسلم البناني ( 2009 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن نافع القيسي ( 6786 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا انس ؓ سے روایت ہے ، رسول اللہ ﷺ جب کھانا کھاتے تو اپنی تینوں انگلیاں چاٹتے اور فرماتے : ”تم میں سے کسی کا نوالہ اگر گر جائے تو اس کو صاف کر کے کھا لے اور شیطان کے لیے نہ چھوڑے ۔ “ اور حکم کیا پیالہ پونچھ لینے کا ہم کو ۔ آپ ﷺ نے فرمایا : ”تم کو معلوم نہیں کون سے کھانے میں برکت ہے ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: عائذ بن عمرو المزني ( 4042 ) ، معاوية بن قرة المزني ( 7591 ) ، ثابت بن اسلم البناني ( 2009 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا عائذ بن عمرو سے روایت ہے ، ابوسفیان ، سلمان ، صہیب اور بلال ؓ کے پاس آیا اور بھی چند لوگ بیٹھے تھے انہوں نے کہا : اللہ کی تلواریں اللہ کے دشمن کی گردن پر اپنے موقع پر نہ پہنچیں (یعنی یہ اللہ کا دشمن نہ مارا گیا) ، سیدنا ابوبکر ؓ نےکہا : تم قریش کے بوڑھے اور سردار کے حق میں ایسا کہتے ہو ۔ (سیدنا ابوبکر ؓ نے مصلحت سے ایسا کہا کہ کہیں ابوسفیان ناراض ہو کر اسلام بھی قبول نہ کرے) اور رسول اللہ ﷺ کے پاس آئے آپ سے بیان کیا ! آپ ﷺ نے فرمایا : ”اے ابوبکر ! تم نے شاید ناراض کیا ان لوگوں کو (یعنی سلمان اور صہیب اور بلال ؓ کو) اگر تم نے ان کو ناراض کیا تو اپنے پروردگار کو ناراض کیا ۔ “ یہ سن کر ابوبکر ؓ ان لوگوں کے پاس آئے اور کہنے لگے : اے بھائیو ! میں نے تم کو ناراض کیا ۔ وہ بولے : نہیں ، اللہ تم کو بخشے اے ہمارے بھائی ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  4k
رواۃ الحدیث: انس بن مالك الانصاري ( 720 ) ، ثابت بن اسلم البناني ( 2009 ) ، سليمان بن المغيرة القيسي ( 3570 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا انس ؓ سے روایت ہے ، سیدنا ابوطلحہ ؓ کا ایک بیٹا جو ام سلیم ؓ کے پیٹ سے تھا مر گیا ۔ انہوں نے اپنے گھر والوں سے کہا : ابوطلحہ کو خبر نہ کرنا ان کے بیٹے کی جب تک میں خود نہ کہوں ۔ آخر ابوطلحہ ؓ آئے ام سلیم ؓ شام کا کھانا سامنے لائیں ۔ انہوں نے کھایا اور پیا ۔ پھر ام سلیم ؓ نے اچھی طرح بناؤ سنگھار کیا ان کے لیے یہاں تک کہ انہوں نے جماع کیا ان سے ، جب ام سلیم ؓ نے دیکھا کہ وہ سیر ہو گئے اور ان کے ساتھ صحبت بھی کر چکے اس وقت انہوں نے کہا : اے ابوطلحہ ! اگر کچھ لوگ اپنی چیز کسی گھر والوں کو دیں پھر اپنی چیز مانگیں تو کیا گھر والے اس کو روک سکتے ہیں ؟ ابوطلحہ ؓ نے کہا : نہیں روک سکتے ۔ ام سلیم ؓ نے کہا : تو میں تم کو خبر دیتی ہوں تمہارے بیٹے کے مرنے کی یہ سن کر ابوطلحہ ؓ غصے ہوئے اور کہنے لگے ، تو نے مجھ کو خبر نہ کی یہاں تک کہ میں آلودہ ہوا (جنبی ہوا) اب مجھ کو خبر کی ۔ وہ گئے اور رسول اللہ ﷺ کے پاس جا کر آپ ﷺ کو خبر کی ۔ آپ ﷺ نے فرمایا : ” اللہ تعالیٰ تم کو برکت دے تمہاری گزری ہوئی رات میں ۔ “ سیدہ ام سلیم ؓ حاملہ ہو گئیں ، رسول اللہ ﷺ سفر میں تھے ۔ ام سلیم ؓ بھی آپ کے ساتھ تھیں اور آپ سفر سے مدینہ میں تشریف لاتے تو رات کو مدینہ میں داخل نہ ہوتے ۔ جب لوگ مدینہ کے قریب پہنچے تو ام سلیم ؓ کو درد زہ شروع ہوا ۔ ابوطلحہ ؓ ان کے پاس ٹھہرے رہے اور رسول اللہ ﷺ تشریف لے گئے ابوطلحہ ؓ کہتے تھے : اے پروردگار ! تو جانتا ہے کہ مجھے تیرے رسول کے ساتھ نکلنا کتنا پسند ہے جب وہ نکلے اور جانا پسند ہے جب وہ جائیں لیکن تو جانتا ہے میں جس وجہ سے رک گیا ہوں ۔ سیدہ ام سلیم ؓ نے کہا : اے ابوطلحہ اب میرے ویسا درد نہیں جیسے پہلے تھا تو چلو ہم چلے ۔ جب میاں بی بی مدینہ میں آئے تو پھر سیدہ ام سلیم ؓ کو درد زہ شروع ہوا اور وہ ایک لڑکا جنیں ۔ میری ماں نے کہا : اے انس ! اس کو کوئی دودھ نہ پلائے جب تک تو صبح کو اس کو رسول اللہ ﷺ کے پاس نہ لے جائے ۔ جب صبح ہوئی تو میں نے بچے کو اٹھایا اور رسول اللہ ﷺ کے پاس لایا میں نے دیکھا تو آپ ﷺ کے ہاتھ میں اونٹوں کے داغنے کا آلہ ہے ۔ آپ ﷺ نے جب مجھ کو دیکھا تو فرمایا : ” شای...
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  9k
رواۃ الحدیث: جابر بن عبد الله الانصاري ( 2069 ) ، محمد بن مسلم القرشي ( 7270 ) ، يزيد بن إبراهيم التستري ( 8387 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا جابر ؓ سے روایت ہے ، رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ” نہ بیماری کا لگنا کچھ ہے اور نہ غول کوئی چیز ہے اور نہ صفر کچھ ہے ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: شعبة بن الحجاج العتكي ( 3795 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، عبد الرحمن بن بشر العبدي ( 4321 ) ، محمد بن إبراهيم السلمي ( 6795 ) ، محمد بن المثنى العنزي ( 6861 ) ، محمد بن جعفر الهذلي ( 6904 ) ، محمد بن بشار العبدي ( 6879 ) ، محمد بن المثنى العنزي ( 6861 ) ، وكيع بن الجراح الرؤاسي ( 8160 ) ، ابن ابي شيبة العبسي ( 5049 ) ، حدیث ۔۔۔ ترجمہ وہی جو اوپر گزرا ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: شعبة بن الحجاج العتكي ( 3795 ) ، شبابة بن سوار الفزاري ( 3741 ) ، محمد بن رافع القشيري ( 6964 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، عبد الرحمن بن بشر العبدي ( 4321 ) ، يحيى بن سعيد القطان ( 8271 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ ترجمہ وہی ہے جو اوپر گزرا ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  1k
Result Pages: 1 2 3 4 5 Next >>


Search took 0.405 seconds