English Show/Hide
کل احادیث 7563 :حدیث نمبر
كتاب بدء الوحى
کتاب: وحی کے بیان میں
THE BOOK OF REVELATION.

1- بَابُ كَيْفَ كَانَ بَدْءُ الْوَحْيِ إِلَى رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ
باب: رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم پر وحی کی ابتداء کیسے ہوئی۔
(1) CHAPTER. How the Divine Revelation started to be revealed to Allah’s Messenger ﷺ.
Tashkeel Show/Hide
وقول الله جل ذكره:‏‏‏‏ ‏‏‏‏إنا اوحينا إليك كما اوحينا إلى نوح والنبيين من بعده‏‏‏‏:‏‏‏‏ وَقَوْلُ اللَّهِ جَلَّ ذِكْرُهُ:‏‏‏‏ ‏‏‏‏إِنَّا أَوْحَيْنَا إِلَيْكَ كَمَا أَوْحَيْنَا إِلَى نُوحٍ وَالنَّبِيِّينَ مِنْ بَعْدِهِ‏‏‏‏:‏‏‏‏
اور اللہ عزوجل کا یہ فرمان کہ ہم نے بلاشبہ (اے محمد صلی اللہ علیہ وسلم ) آپ کی طرف وحی کا نزول اسی طرح کیا ہے جس طرح نوح (علیہ السلام) اور ان کے بعد آنے والے تمام نبیوں کی طرف کیا تھا۔
حدیث نمبر: 1
Tashkeel Show/Hide
حدثنا الحميدي عبد الله بن الزبير‏‏‏‏‏‏‏‏‏‏، قال:‏‏‏‏ حدثنا سفيان‏‏‏‏‏‏‏‏‏‏، قال:‏‏‏‏ حدثنا يحيى بن سعيد الانصاري‏‏‏‏‏‏‏‏‏‏، قال:‏‏‏‏ اخبرني محمد بن إبراهيم التيمي‏‏‏‏‏‏‏‏‏‏، انه سمع علقمة بن وقاص الليثي‏‏‏‏‏‏‏‏‏‏، يقول:‏‏‏‏ سمعت عمر بن الخطاب‏‏‏‏‏‏‏‏‏‏رضي الله عنه على المنبر، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ سمعت رسول الله صلى الله عليه وسلم، ‏‏‏‏‏‏يقول:‏‏‏‏ "إنما الاعمال بالنيات، ‏‏‏‏‏‏وإنما لكل امرئ ما نوى، ‏‏‏‏‏‏فمن كانت هجرته إلى دنيا يصيبها او إلى امراة ينكحها، ‏‏‏‏‏‏فهجرته إلى ما هاجر إليه".حَدَّثَنَا الْحُمَيْدِيُّ عَبْدُ اللَّهِ بْنُ الزُّبَيْرِ‏‏‏‏‏‏ٍ‏‏‏‏، قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ‏‏‏‏‏‏ٍ‏‏‏‏، قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا يَحْيَى بْنُ سَعِيدٍ الْأَنْصَارِيُّ‏‏‏‏‏‏ٍ‏‏‏‏، قَالَ:‏‏‏‏ أَخْبَرَنِي مُحَمَّدُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ التَّيْمِيُّ‏‏‏‏‏‏ٍ‏‏‏‏، أَنَّهُ سَمِعَ عَلْقَمَةَ بْنَ وَقَّاصٍ اللَّيْثِيَّ‏‏‏‏‏‏ٍ‏‏‏‏، يَقُولُ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ عُمَرَ بْنَ الْخَطَّابِ‏‏‏‏‏‏ٍ‏‏‏‏رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ عَلَى الْمِنْبَرِ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏يَقُولُ:‏‏‏‏ "إِنَّمَا الْأَعْمَالُ بِالنِّيَّاتِ، ‏‏‏‏‏‏وَإِنَّمَا لِكُلِّ امْرِئٍ مَا نَوَى، ‏‏‏‏‏‏فَمَنْ كَانَتْ هِجْرَتُهُ إِلَى دُنْيَا يُصِيبُهَا أَوْ إِلَى امْرَأَةٍ يَنْكِحُهَا، ‏‏‏‏‏‏فَهِجْرَتُهُ إِلَى مَا هَاجَرَ إِلَيْهِ".
ہم کو حمیدی نے یہ حدیث بیان کی، انہوں نے کہا کہ ہم کو سفیان نے یہ حدیث بیان کی، وہ کہتے ہیں ہم کو یحییٰ بن سعید انصاری نے یہ حدیث بیان کی، انہوں نے کہا کہ مجھے یہ حدیث محمد بن ابراہیم تیمی سے حاصل ہوئی۔ انہوں نے اس حدیث کو علقمہ بن وقاص لیثی سے سنا، ان کا بیان ہے کہ میں نے مسجد نبوی میں منبر رسول صلی اللہ علیہ وسلم پر عمر بن خطاب رضی اللہ عنہ کی زبان سے سنا، وہ فرما رہے تھے کہ میں نے جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے سنا آپ صلی اللہ علیہ وسلم فرما رہے تھے کہ تمام اعمال کا دارومدار نیت پر ہے اور ہر عمل کا نتیجہ ہر انسان کو اس کی نیت کے مطابق ہی ملے گا۔ پس جس کی ہجرت (ترک وطن) دولت دنیا حاصل کرنے کے لیے ہو یا کسی عورت سے شادی کی غرض ہو۔ پس اس کی ہجرت ان ہی چیزوں کے لیے ہو گی جن کے حاصل کرنے کی نیت سے اس نے ہجرت کی ہے۔

Narrated 'Umar bin Al-Khattab: I heard Allah's Apostle saying, "The reward of deeds depends upon the intentions and every person will get the reward according to what he has intended. So whoever emigrated for worldly benefits or for a woman to marry, his emigration was for what he emigrated for."
USC-MSA web (English) Reference: Book 1 , Number 1