English Show/Hide
کل احادیث 7563 :حدیث نمبر
كتاب الشركة
کتاب: شراکت کے مسائل کے بیان میں
THE BOOK OF PARTNERSHIP.

4- بَابُ الْقِرَانِ فِي التَّمْرِ بَيْنَ الشُّرَكَاءِ حَتَّى يَسْتَأْذِنَ أَصْحَابَهُ:
باب: دو دو کھجوریں ملا کر کھانا کسی شریک کو جائز نہیں جب تک دوسرے ساتھ والوں سے اجازت نہ لے۔
(4) CHAPTER. A partner sharing a meal should not eat two dates at a time unless he gets the permission of his partner.
حدیث نمبر: 2490
Tashkeel Show/Hide
حدثنا ابو الوليد، ‏‏‏‏‏‏حدثنا شعبة، ‏‏‏‏‏‏عن جبلة، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ كنا بالمدينة فاصابتنا سنة، ‏‏‏‏‏‏فكان ابن الزبير يرزقنا التمر، ‏‏‏‏‏‏وكان ابن عمر يمر بنا، ‏‏‏‏‏‏فيقول:‏‏‏‏ لا تقرنوا، ‏‏‏‏‏‏فإن النبي صلى الله عليه وسلم"نهى عن الإقران، ‏‏‏‏‏‏إلا ان يستاذن الرجل منكم اخاه".حَدَّثَنَا أَبُو الْوَلِيدِ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا شُعْبَةُ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ جَبَلَةَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ كُنَّا بِالْمَدِينَةِ فَأَصَابَتْنَا سَنَةٌ، ‏‏‏‏‏‏فَكَانَ ابْنُ الزُّبَيْرِ يَرْزُقُنَا التَّمْرَ، ‏‏‏‏‏‏وَكَانَ ابْنُ عُمَرَ يَمُرُّ بِنَا، ‏‏‏‏‏‏فَيَقُولُ:‏‏‏‏ لَا تَقْرُنُوا، ‏‏‏‏‏‏فَإِنَّ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ"نَهَى عَنِ الْإِقْرَانِ، ‏‏‏‏‏‏إِلَّا أَنْ يَسْتَأْذِنَ الرَّجُلُ مِنْكُمْ أَخَاهُ".
ہم سے ابوالولید نے بیان کیا، کہا ہم سے شعبہ نے بیان کیا، ان سے جبلہ نے بیان کیا کہ ہمارا قیام مدینہ میں تھا اور ہم پر قحط کا دور دورہ ہوا۔ عبداللہ بن زبیر رضی اللہ عنہما ہمیں کھجور کھانے کے لیے دیتے تھے اور عبداللہ بن عمر رضی اللہ عنہما گزرتے ہوئے یہ کہہ کر جایا کرتے تھے کہ دو دو کھجور ایک ساتھ ملا کر نہ کھانا کیونکہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنے دوسرے ساتھی کی اجازت کے بغیر ایسا کرنے سے منع فرمایا ہے۔

Narrated Jabala: "While at Medina we were struck with famine. Ibn Az-Zubair used to provide us with dates as our food. Ibn `Umar used to pass by us and say, "Don't eat two dates together at a time as the Prophet has forbidden eating two dates together at a time (in a gathering) unless one takes the permission of one's companion brother."
USC-MSA web (English) Reference: Book 44 , Number 670