كِتَاب الْحُدُودِ
حدود کا بیان

5- باب مَنِ اعْتَرَفَ عَلَى نَفْسِهِ بِالزِّنَا:
باب: جو شخص زنا کا اعتراف کر لے اس کا بیان۔
حدیث نمبر: 4427
Tashkeel Show/Hide
حدثنا قتيبة بن سعيد ، وابو كامل الجحدري واللفظ لقتيبة، ‏‏‏‏‏‏قالا:‏‏‏‏ حدثنا ابو عوانة ، عن سماك ، عن سعيد بن جبير ، عن ابن عباس ان النبي صلى الله عليه وسلم، ‏‏‏‏‏‏قال لماعز بن مالك:‏‏‏‏ " احق ما بلغني عنك؟، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ وما بلغك عني؟، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ بلغني انك وقعت بجارية آل فلان، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ نعم، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ فشهد اربع شهادات ثم امر به فرجم ".حَدَّثَنَا قُتَيْبَةُ بْنُ سَعِيدٍ ، وَأَبُو كَامِلٍ الْجَحْدَرِيُّ وَاللَّفْظُ لِقُتَيْبَةَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَا:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا أَبُو عَوَانَةَ ، عَنْ سِمَاكٍ ، عَنْ سَعِيدِ بْنِ جُبَيْرٍ ، عَنْ ابْنِ عَبَّاسٍ أَنّ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ لِمَاعِزِ بْنِ مَالِكٍ:‏‏‏‏ " أَحَقٌّ مَا بَلَغَنِي عَنْكَ؟، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ وَمَا بَلَغَكَ عَنِّي؟، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ بَلَغَنِي أَنَّكَ وَقَعْتَ بِجَارِيَةِ آلِ فُلَانٍ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ نَعَمْ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ فَشَهِدَ أَرْبَعَ شَهَادَاتٍ ثُمَّ أَمَرَ بِهِ فَرُجِمَ ".
سیدنا عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہما سے روایت ہے، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ماعز بن مالک سے پوچھا: جو خبر میں نے تیری سنی ہے وہ سچ ہے؟ ماعز نے کہا: وہ کیا خبر ہے؟ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: تو نے جماع کیا فلاں لوگوں کی لونڈی سے۔ ماعز نے کہا: ہاں سچ ہے پھر اس نے چار بار اقرار کیا۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے حکم کیا پتھروں سے مارا گیا۔