کل احادیث 3956 :حدیث نمبر
كتاب الجهاد عن رسول الله صلى الله عليه وسلم
کتاب: جہاد کے احکام و مسائل
0

7- باب مَا جَاءَ فِي الصَّفِّ وَالتَّعْبِئَةِ عِنْدَ الْقِتَالِ
باب: لڑائی کے وقت صف بندی اور لشکر کی ترتیب کا بیان۔
حدیث نمبر: 1677
Tashkeel Show/Hide
حدثنا حدثنا محمد بن حميد الرازي، حدثنا سلمة بن الفضل، عن محمد بن إسحاق، عن عكرمة، عن ابن عباس، عن عبد الرحمن بن عوف، قال:‏‏‏‏ " عبانا النبي صلى الله عليه وسلم ببدر ليلا "، ‏‏‏‏‏‏قال ابو عيسى:‏‏‏‏ وفي الباب، ‏‏‏‏‏‏عن ابي ايوب، ‏‏‏‏‏‏وهذا حديث غريب لا نعرفه إلا من هذا الوجه، ‏‏‏‏‏‏وسالت محمد بن إسماعيل، ‏‏‏‏‏‏عن هذا الحديث فلم يعرفه، ‏‏‏‏‏‏وقال:‏‏‏‏ محمد بن إسحاق، ‏‏‏‏‏‏سمع من عكرمة، ‏‏‏‏‏‏وحين رايته كان حسن الراي في محمد بن حميد الرازي، ‏‏‏‏‏‏ثم ضعفه بعد.حَدَّثَنَا حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ حُمَيْدٍ الرَّازِيُّ، حَدَّثَنَا سَلَمَةُ بْنُ الْفَضْلِ، عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ إِسْحَاق، عَنْ عِكْرِمَةَ، عَنْ ابْنِ عَبَّاسٍ، عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ عَوْفٍ، قَالَ:‏‏‏‏ " عَبَّأَنَا النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ بِبَدْرٍ لَيْلًا "، ‏‏‏‏‏‏قَالَ أَبُو عِيسَى:‏‏‏‏ وَفِي الْبَاب، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي أَيُّوبَ، ‏‏‏‏‏‏وَهَذَا حَدِيثٌ غَرِيبٌ لَا نَعْرِفُهُ إِلَّا مِنْ هَذَا الْوَجْهِ، ‏‏‏‏‏‏وَسَأَلْتُ مُحَمَّدَ بْنَ إِسْمَاعِيل، ‏‏‏‏‏‏عَنْ هَذَا الْحَدِيثِ فَلَمْ يَعْرِفْهُ، ‏‏‏‏‏‏وَقَالَ:‏‏‏‏ مُحَمَّدُ بْنُ إِسْحَاق، ‏‏‏‏‏‏سَمِعَ مِنْ عِكْرِمَةَ، ‏‏‏‏‏‏وَحِينَ رَأَيْتُهُ كَانَ حَسَنَ الرَّأْيِ فِي مُحَمَّدِ بْنِ حُمَيْدٍ الرَّازِيِّ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ ضَعَّفَهُ بَعْدُ.
عبدالرحمٰن بن عوف رضی الله عنہ کہتے ہیں کہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے مقام بدر میں رات کے وقت ہمیں مناسب جگہوں پر متعین کیا ۱؎۔
امام ترمذی کہتے ہیں: ۱- اس باب میں ابوایوب سے بھی روایت ہے، یہ حدیث غریب ہے، ہم اسے صرف اسی سند سے جانتے ہیں، ۲- میں نے محمد بن اسماعیل بخاری سے اس حدیث کے بارے میں پوچھا: تو انہوں نے لاعلمی کا اظہار کیا اور کہا: محمد بن اسحاق کا سماع عکرمہ سے ثابت ہے، اور جب میں نے بخاری سے ملاقات کی تھی تو وہ محمد بن حمید الرازی کے بارے میں اچھی رائے رکھتے تھے، پھر بعد میں ان کو ضعیف قرار دیا۔

تخریج دارالدعوہ: تفرد بہ المؤلف (تحفة الأشراف: ۹۷۲۴) (ضعیف الإسناد) (اس کے راوی محمد بن حمید رازی ضعیف ہیں)

وضاحت: ۱؎: اس حدیث سے معلوم ہوا کہ دشمنوں سے مقابلہ آرائی سے پہلے مجاہدین کی صف بندی کرنا اور مناسب جگہوں پر انہیں متعین کرنا ضروری ہے۔

قال الشيخ زبیر علی زئی في انوار الصحیفة فی احادیث ضعیفة من السنن الاربعة:
(1677) إسناده ضعيف ¤ ابن إسحاق عنعن (تقدم:85) وفيه علة أخري وھي ضعف محمد بن حميد (تقدم:85)

قال الشيخ الألباني: ضعيف الإسناد