الادب المفرد
كِتَابُ الْوَالِدَيْنِ -- كتاب الوالدين
3. بَابُ بِرِّ الأَبِ
والد کے ساتھ حسن سلوک کا بیان
حدیث نمبر: 6
حَدَّثَنَا بِشْرُ بْنُ مُحَمَّدٍ، قَالَ‏:‏ أَخْبَرَنَا عَبْدُ اللّٰهِ، قَالَ‏:‏ أَخْبَرَنَا يَحْيَى بْنُ أَيُّوبَ، قَالَ‏:‏ حَدَّثَنَا أَبُو زُرْعَةَ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، أَتَى رَجُلٌ نَبِيَّ اللّٰهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فَقَالَ‏:‏ مَا تَأْمُرُنِي‏؟‏ فَقَالَ‏:‏ ”بِرَّ أُمَّكَ“، ثُمَّ عَادَ، فَقَالَ‏:‏ ”بِرَّ أُمَّكَ“، ثُمَّ عَادَ الرَّابِعَةَ، فَقَالَ‏:‏ ”بِرَّ أُمَّكَ“، ثُمَّ عَادَ الْخَامِسَةَ، فَقَالَ‏:‏ ”بِرَّ أَبَاكَ‏.‏“
سیدنا ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ ایک آدمی اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس آیا اور عرض کی: آپ مجھے کیا حکم دیتے ہیں؟ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: اپنی ماں سے حسن سلوک کر۔ اس نے دوبارہ وہی سوال کیا۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: اپنی ماں کے ساتھ حسن سلوک کر۔ اس نے پھر وہی سوال دہرایا۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: اپنی ماں کے ساتھ حسن سلوک کر۔ پھر اس نے چوتھی مرتبہ پوچھا، آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: اپنی ماں سے حسن سلوک کرو۔ اس نے پانچویں مرتبہ پھر کہا۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: اپنے باپ سے حسن سلوک کر۔

تخریج الحدیث: «صحيح: مسند أحمد: 402/2»

قال الشيخ الألباني: صحیح