شمائل ترمذي کل احادیث 417 :حدیث نمبر
سوانح حیات امام ترمذی رحمہ اللہ
سوانح حیات:​
تلامذہ:
امام ترمذی سے بہت سارے علمائے حدیث کو شرف تلمذ حاصل ہے،
جن میں سے بعض رواۃ مندرجہ ذیل ہیں:
➊ ابوبکر احمد بن اسماعیل بن عامر السمرقندی
➋ ابوحامد احمد بن عبداللہ بن داود المروزی
➌ احمد بن علی بن حسنویہ المقریٔ
➍ احمد بن یوسف نسفی
➎ ابو الحارث اسد بن حمدویہ
➏ حماد بن شاکر وراق نسفی
➐ مکحول بن فضل نسفی
➑ محمود بن عنبر نسفی
➒ ابوالفضل محمد بن محمود بن عنبر نسفی
➓ عبدبن محمد بن محمود نسفی
⓫ داود بن نصر بن سہیل برزوی
⓬ محمد بن مکی بن نوح نسفی
⓭ محمد بن سفیان بن نضر نسفی
⓮ محمد بن منذر بن سعید ہروی
⓯ ہیثم بن کلیب شاشی (الشمائل کے راوی)
⓰ محمد بن محبوب ابوالعباس محبوبی مروزی (سنن الترمذی کے راوی)
⓱ امام بخاری نے بھی آپ سے ایک حدیث روایت کی ہے جس کے بارے میں امام ترمذی کہتے ہیں کہ یہ حدیث محمد بن اسماعیل نے مجھ سے سنی، وہ حدیث یہ ہے: «عن أبى سعيد: يا على لا يحل لأحد أن يجنب فى المسجد غيري وغيرك.» [سنن الترمذي 3727]