رواة الحدیث

نتائج
نتیجہ مطلوبہ تلاش لفظ / الفاظ: بشر السري البصري 1866
کتاب/کتب میں: سنن ترمذی
10 رزلٹ جن میں تمام الفاظ آئے ہیں۔
رواۃ الحدیث: عبد الله بن زيد الجرمي ( 4820 ) ، ايوب السختياني ( 746 ) ، حماد بن زيد الازدي ( 2491 ) ، عائشة بنت ابي بكر الصديق ( 4049 ) ، عبد الله بن يزيد البصري ( 5154 ) ، عبد الله بن زيد الجرمي ( 4820 ) ، ايوب السختياني ( 746 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، بشر بن السري البصري ( 1866 ) ، محمد بن ابي عمر العدني ( 7317 ) ، حدیث ۔۔۔ ام المؤمنین عائشہ ؓ کہتی ہیں کہ نبی اکرم ﷺ اپنی بیویوں کے درمیان باری تقسیم کرتے ہوئے فرماتے : ” اے اللہ ! یہ میری تقسیم ہے جس پر میں قدرت رکھتا ہوں ، لیکن جس کی قدرت تو رکھتا ہے ، میں نہیں رکھتا ، اس کے بارے میں مجھے ملامت نہ کرنا “ ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : عائشہ ؓ کی حدیث کو اسی طرح کئی لوگوں نے بسند « حماد بن سلمۃ عن أيوب عن أبي قلابۃ عن عبد اللہ بن يزيد عن عائشۃ » روایت کیا ہے کہ نبی اکرم ﷺ باری تقسیم کرتے تھے جب کہ اسے حماد بن زید اور دوسرے کئی ثقات نے بسند « أيوب عن أبي قلابۃ » روایت کیا ہے کہ نبی اکرم ﷺ باری تقسیم کرتے تھے اور یہ حماد بن سلمہ کی حدیث سے زیادہ صحیح ہے ، اور ” جس کی قدرت تو رکھتا ہے میں نہیں رکھتا “ سے مراد محبت و مؤدّۃ ہے ، اسی طرح بعض اہل علم نے اس کی تفسیر کی ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 396  -  4k
رواۃ الحدیث: جابر بن عبد الله الانصاري ( 2069 ) ، محمد بن مسلم القرشي ( 7270 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، بشر بن السري البصري ( 1866 ) ، محمد بن ابي عمر العدني ( 7317 ) ، حدیث ۔۔۔ جابر ؓ کہتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے « ليلۃ البعير » (اونٹ کی رات) میں میرے لیے پچیس بار دعائے مغفرت کی ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : ۱- یہ حدیث حسن صحیح غریب ہے ، ۲- ان کے قول « ليلۃ البعير » اونٹ کی رات سے وہ رات مراد ہے جو جابر سے کئی سندوں سے مروی ہے کہ وہ ایک سفر میں نبی اکرم ﷺ کے ساتھ تھے ، انہوں نے اپنا اونٹ نبی اکرم ﷺ کے ہاتھ بیچ دیا اور مدینہ تک اس پر سوار ہو کر جانے کی شرط رکھ لی ، جابر ؓ کہتے ہیں : جس رات میں نے نبی اکرم ﷺ کے ہاتھ اونٹ بیچا آپ نے پچیس بار میرے لیے دعائے مغفرت فرمائی ۔ اور جابر کے والد عبداللہ بن عمرو بن حرام ؓ احد کے دن شہید کر دیئے گئے تھے اور انہوں نے کچھ لڑکیاں چھوڑی تھیں ، جابر ان کی پرورش کرتے تھے اور ان پر خرچ دیتے تھے ، اس کی وجہ سے نبی اکرم ﷺ ان کے ساتھ حسن سلوک فرماتے تھے اور ان پر رحم کرتے تھے ، ۳- اسی طرح ایک اور حدیث میں جابر سے ایسے ہی مروی ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 344  -  4k
رواۃ الحدیث: جابر بن عبد الله الانصاري ( 2069 ) ، محمد بن مسلم القرشي ( 7270 ) ، سفيان بن عيينة الهلالي ( 3443 ) ، الفضل بن دكين الملائي ( 1548 ) ، بشر بن السري البصري ( 1866 ) ، وكيع بن الجراح الرؤاسي ( 8160 ) ، محمود بن غيلان العدوي ( 7352 ) ، حدیث ۔۔۔ جابر ؓ کہتے ہیں کہ نبی اکرم ﷺ وادی محسر میں تیز چال چلے ۔ (بشر کی روایت میں یہ اضافہ ہے کہ) آپ مزدلفہ سے لوٹے ، آپ پرسکون یعنی عام رفتار سے چل رہے تھے ، لوگوں کو بھی آپ نے سکون و اطمینان سے چلنے کا حکم دیا ۔ (اور ابونعیم کی روایت میں اتنا اضافہ ہے کہ) آپ نے انہیں ایسی کنکریوں سے رمی کرنے کا حکم دیا جو دو انگلیوں میں پکڑی جا سکیں ، اور فرمایا : ” شاید میں اس سال کے بعد تمہیں نہ دیکھ سکوں “ ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : ۱- جابر کی حدیث حسن صحیح ہے ، ۲- اس باب میں اسامہ بن زید ؓ سے بھی روایت ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 344  -  3k
رواۃ الحدیث: عبد الله بن العباس القرشي ( 4883 ) ، سعيد بن جبير الاسدي ( 3307 ) ، عبد الاعلى بن عامر الثعلبي ( 4206 ) ، سفيان الثوري ( 3436 ) ، بشر بن السري البصري ( 1866 ) ، محمود بن غيلان العدوي ( 7352 ) ، حدیث ۔۔۔ عبداللہ بن عباس ؓ کہتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ” جس نے بغیر علم کے (بغیر سمجھے بوجھے) قرآن کی تفسیر کی ، تو وہ اپنا ٹھکانا جہنم میں بنا لے “ ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : یہ حدیث حسن صحیح ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: عبد الله بن العباس القرشي ( 4883 ) ، سعيد بن جبير الاسدي ( 3307 ) ، حبيب بن ابي ثابت الاسدي ( 2244 ) ، سفيان الثوري ( 3436 ) ، مؤمل بن إسماعيل العدوي ( 6649 ) ، بشر بن السري البصري ( 1866 ) ، محمود بن غيلان العدوي ( 7352 ) ، حدیث ۔۔۔ عبداللہ بن عباس ؓ کہتے ہیں کہ نبی اکرم ﷺ نے فرمایا : ” کوئی شخص جو اللہ اور یوم آخرت پر ایمان رکھتا ہو انصار سے بغض نہیں رکھ سکتا “ ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : یہ حدیث حسن صحیح ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: عثمان بن عفان ( 5543 ) ، عبد الله بن حبيب السلمي ( 4771 ) ، علقمة بن مرثد الحضرمي ( 5716 ) ، سفيان الثوري ( 3436 ) ، عبد الرحمن بن مهدي العنبري ( 4493 ) ، عثمان بن عفان ( 5543 ) ، عبد الله بن حبيب السلمي ( 4771 ) ، علقمة بن مرثد الحضرمي ( 5716 ) ، سفيان الثوري ( 3436 ) ، بشر بن السري البصري ( 1866 ) ، محمود بن غيلان العدوي ( 7352 ) ، حدیث ۔۔۔ عثمان بن عفان ؓ کہتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ” تم میں سب سے بہتر یا تم میں سب سے افضل وہ شخص ہے جو قرآن سیکھے اور سکھلائے “ ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : ۱- یہ حدیث حسن صحیح ہے ، ۲- عبدالرحمٰن بن مہدی اور کئی دوسروں نے اسی طرح بسند « سفيان الثوري عن علقمۃ بن مرثد عن أبي عبدالرحمٰن عن عثمان عن النبي صلى اللہ عليہ وسلم » روایت کی ہے ، ۳- سفیان اس کی سند میں سعد بن عبیدہ کا ذکر نہیں کرتے ہیں ، ۴- یحییٰ بن سعید قطان نے یہ حدیث بسند « سفيان وشعبۃ عن علقمۃ بن مرثد عن سعد بن عبيدۃ عن أبي عبدالرحمٰن عن عثمان عن النبي صلى اللہ عليہ وسلم » روایت کی ۔ ہم سے بیان کیا اسے محمد بن بشار نے ، وہ کہتے ہیں : ہم سے بیان کیا یحییٰ بن سعید نے سفیان اور شعبہ کے واسطہ سے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  4k
رواۃ الحدیث: اسماء بنت يزيد الانصارية ( 560 ) ، شهر بن حوشب الاشعري ( 3837 ) ، عبد الله بن عثمان القاري ( 4944 ) ، سفيان الثوري ( 3436 ) ، محمد بن عبد الله الزبيرى ( 7100 ) ، بشر بن السري البصري ( 1866 ) ، محمود بن غيلان العدوي ( 7352 ) ، سفيان الثوري ( 3436 ) ، محمد بن عبد الله الزبيرى ( 7100 ) ، محمد بن بشار العبدي ( 6879 ) ، حدیث ۔۔۔ اسماء بنت یزید ؓ کہتی ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ” صرف تین جگہ پر جھوٹ جائز اور حلال ہے ، ایک یہ کہ آدمی اپنی بیوی سے بات کرے تاکہ اس کو راضی کر لے ، دوسرا جنگ میں جھوٹ بولنا اور تیسرا لوگوں کے درمیان صلح کرانے کے لیے جھوٹ بولنا “ ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: جابر بن عبد الله الانصاري ( 2069 ) ، عبد الله بن عقيل الهاشمي ( 5062 ) ، زائدة بن قدامة الثقفي ( 2980 ) ، بشر بن السري البصري ( 1866 ) ، محمد بن ابي عمر العدني ( 7317 ) ، حدیث ۔۔۔ جابر بن عبداللہ ؓ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے حمزہ بن عبدالمطلب ؓ کو ایک ہی کپڑے میں ایک چادر میں کفنایا ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : ۱- عائشہ ؓ کی حدیث حسن صحیح ہے ، ۲- نبی اکرم ﷺ کے کفن کے بارے میں مختلف احادیث آئی ہیں ۔ اور ان سبھی حدیثوں میں عائشہ والی حدیث سب سے زیادہ صحیح ہے ، ۳- اس باب میں علی ، ابن عباس ، عبداللہ بن مغفل اور ابن عمر ؓ سے بھی احادیث آئی ہیں ، ۴- صحابہ کرام وغیرہم میں سے اکثر اہل علم کا عمل عائشہ ہی کی حدیث پر ہے ، ۵- سفیان ثوری کہتے ہیں : آدمی کو تین کپڑوں میں کفنایا جائے ۔ چاہے ایک قمیص اور دو لفافوں میں ، اور چاہے تین لفافوں میں ۔ اگر دو کپڑے نہ ملیں تو ایک بھی کافی ہے ، اور دو کپڑے بھی کافی ہو جاتے ہیں ، اور جسے تین میسر ہوں تو اس کے لیے مستحب یہی تین کپڑے ہیں ۔ شافعی ، احمد اور اسحاق بن راہویہ کا یہی قول ہے ۔ وہ کہتے ہیں : عورت کو پانچ کپڑوں میں کفنایا جائے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  4k
رواۃ الحدیث: عثمان بن عفان ( 5543 ) ، عبد الرحمن بن ابي عمرة الانصاري ( 4279 ) ، عثمان بن حكيم الاوسي ( 5509 ) ، سفيان الثوري ( 3436 ) ، بشر بن السري البصري ( 1866 ) ، محمود بن غيلان العدوي ( 7352 ) ، حدیث ۔۔۔ عثمان بن عفان ؓ کہتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : جو عشاء کی جماعت میں حاضر رہے گا تو اسے آدھی رات کے قیام کا ثواب ملے گا اور جو عشاء اور فجر دونوں نمازیں جماعت سے ادا کرے گا ، اسے پوری رات کے قیام کا ثواب ملے گا ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : ۱- عثمان کی حدیث حسن صحیح ہے ، ۲- اس باب میں ابن عمر ، ابوہریرہ ، انس ، عمارہ بن رویبہ ، جندب بن عبداللہ بن سفیان بجلی ، ابی ابن کعب ، ابوموسیٰ اور بریدہ ؓ سے بھی احادیث آئی ہیں ، ۳- یہ حدیث عبدالرحمٰن بن ابی عمرہ کے طریق سے عثمان ؓ سے موقوفاً روایت کی گئی ہے ، اور کئی دوسری سندوں سے بھی یہ عثمان ؓ سے مرفوعاً مروی ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  3k
رواۃ الحدیث: عائشة بنت ابي بكر الصديق ( 4049 ) ، عائشة بنت طلحة القرشية ( 4051 ) ، طلحة بن يحيى القرشي ( 4027 ) ، سفيان الثوري ( 3436 ) ، بشر بن السري البصري ( 1866 ) ، محمود بن غيلان العدوي ( 7352 ) ، حدیث ۔۔۔ ام المؤمنین عائشہ ؓ کہتی ہیں کہ نبی اکرم ﷺ میرے پاس آتے تو پوچھتے : ” کیا تمہارے پاس کھانا ہے ؟ “ میں کہتی : نہیں ۔ تو آپ فرماتے : ” تو میں روزے سے ہوں “ ، ایک دن آپ میرے پاس تشریف لائے تو میں نے عرض کیا : اللہ کے رسول ! ہمارے پاس ایک ہدیہ آیا ہے ۔ آپ نے پوچھا : ” کیا چیز ہے ؟ “ میں نے عرض کیا : ” حیس “ ، آپ نے فرمایا : ” میں صبح سے روزے سے ہوں “ ، پھر آپ نے کھا لیا ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : یہ حدیث حسن ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  3k


Search took 0.534 seconds