رواة الحدیث

نتائج
نتیجہ مطلوبہ تلاش لفظ / الفاظ: بكر وائل الليثي 1941
کتاب/کتب میں: سنن ترمذی
3 رزلٹ جن میں تمام الفاظ آئے ہیں۔
رواۃ الحدیث: انس بن مالك الانصاري ( 720 ) ، محمد بن شهاب الزهري ( 7272 ) ، بكر بن وائل الليثي ( 1941 ) ، وائل بن داود التيمي ( 8112 ) ، سفيان بن عيينة الهلالي ( 3443 ) ، محمد بن ابي عمر العدني ( 7317 ) ، حدیث ۔۔۔ انس بن مالک ؓ کہتے ہیں کہ نبی اکرم ﷺ نے صفیہ بنت حیی کا ولیمہ ستو اور کھجور سے کیا ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : یہ حدیث حسن غریب ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 344  -  2k
رواۃ الحدیث: همام بن يحيى العوذي ( 8097 ) ، عبد الله بن عمر العدوي ( 4967 ) ، سالم بن عبد الله العدوي ( 3194 ) ، محمد بن شهاب الزهري ( 7272 ) ، سفيان بن عيينة الهلالي ( 3443 ) ، بكر بن وائل الليثي ( 1941 ) ، منصور بن المعتمر السلمي ( 7673 ) ، زياد بن سعد الخراساني ( 3086 ) ، همام بن يحيى العوذي ( 8097 ) ، محمد بن شهاب الزهري ( 7272 ) ، مالك بن انس الاصبحي ( 6659 ) ، يونس بن يزيد الايلي ( 8621 ) ، معمر بن ابي عمرو الازدي ( 7633 ) ، عبد الله بن عمر العدوي ( 4967 ) ، سالم بن عبد الله العدوي ( 3194 ) ، محمد بن شهاب الزهري ( 7272 ) ، زياد بن سعد الخراساني ( 3086 ) ، ابن جريج المكي ( 5223 ) ، عبد الله بن عمر العدوي ( 4967 ) ، سالم بن عبد الله العدوي ( 3194 ) ، محمد بن شهاب الزهري ( 7272 ) ، محمد بن شهاب الزهري ( 7272 ) ، معمر بن ابي عمرو الازدي ( 7633 ) ، عبد الرزاق بن همام الحميري ( 4533 ) ، عبد بن حميد الكشي ( 4232 ) ، حدیث ۔۔۔ ابن شہاب زہری کہتے ہیں کہ نبی اکرم ﷺ ، ابوبکر اور عمر ؓ جنازے کے آگے آگے چلتے تھے ۔ زہری یہ بھی کہتے ہیں کہ مجھے سالم بن عبداللہ نے خبر دی کہ ان کے والد عبداللہ بن عمر جنازے کے آگے چلتے تھے ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : ۱- عبداللہ بن عمر ؓ کی حدیث اسی طرح ہے ، اسے ابن جریج ، زیاد بن سعد اور دیگر کئی لوگوں نے زہری سے ابن عیینہ کی حدیث ہی کی طرح روایت کیا ہے ، اور زہری نے سالم بن عبداللہ سے اور سالم نے اپنے والد ابن عمر سے روایت کی ہے ۔ معمر ، یونس بن یزید اور حفاظ میں سے اور بھی کئی لوگوں نے زہری سے روایت کی ہے کہ نبی اکرم ﷺ جنازے کے آگے چلتے تھے ۔ زہری کہتے ہیں کہ مجھے سالم بن عبداللہ نے خبر دی ہے کہ ان کے والد جنازے کے آگے چلتے تھے ۔ تمام محدثین کی رائے ہے کہ مرسل حدیث ہی اس باب میں زیادہ صحیح ہے ، ۲- ابن مبارک کہتے ہیں کہ اس سلسلے میں زہری کی حدیث مرسل ہے ، اور ابن عیینہ کی حدیث سے زیادہ صحیح ہے ، ۳- ابن مبارک کہتے ہیں کہ میرا خیال ہے کہ ابن جریج نے یہ حدیث ابن عیینہ سے لی ہے ، ۴- ہمام بن یحییٰ نے یہ حدیث زیاد بن سعد ، منصور ، بکر اور سفیان سے اور ان لوگوں نے زہری سے ، زہری نے سالم بن عبداللہ سے اور سالم نے اپنے والد ابن عمر سے روایت کی ہے ۔ اور سفیان سے مراد سفیان بن عیینہ ہیں جن سے ہمام نے روایت کی ہے ، ۵- اس باب میں انس ؓ سے بھی روایت ہے...
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  8k
رواۃ الحدیث: عبد الله بن عمر العدوي ( 4967 ) ، سالم بن عبد الله العدوي ( 3194 ) ، محمد بن شهاب الزهري ( 7272 ) ، بكر بن وائل الليثي ( 1941 ) ، سفيان بن عيينة الهلالي ( 3443 ) ، زياد بن سعد الخراساني ( 3086 ) ، منصور بن المعتمر السلمي ( 7673 ) ، همام بن يحيى العوذي ( 8097 ) ، عمرو بن عاصم القيسي ( 6146 ) ، الحسن بن علي الهذلي ( 1284 ) ، حدیث ۔۔۔ عبداللہ بن عمر ؓ کہتے ہیں کہ میں نے نبی اکرم ﷺ ، ابوبکر اور عمر ؓ سب کو جنازے کے آگے آگے چلتے دیکھا ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k


Search took 0.479 seconds