رواة الحدیث

نتائج
نتیجہ مطلوبہ تلاش لفظ / الفاظ: بلال ابي بردة الاشعري 1960
کتاب/کتب میں: سنن ترمذی
1 رزلٹ جن میں تمام الفاظ آئے ہیں۔
رواۃ الحدیث: عبد الله بن قيس الاشعري ( 5021 ) ، ابو بردة بن ابي موسى الاشعري ( 4108 ) ، بلال بن ابي بردة الاشعري ( 1960 ) ، اسم مبهم ( 1131 ) ، عبيد الله بن الوازع الكلابي ( 5377 ) ، عمرو بن عاصم القيسي ( 6146 ) ، عبد بن حميد الكشي ( 4232 ) ، حدیث ۔۔۔ بنی مرہ کے ایک شیخ کہتے ہیں کہ میں کوفہ آیا مجھے بلال بن ابوبردہ کے حالات کا علم ہوا تو میں نے (جی میں) کہا کہ ان میں عبرت و موعظت ہے ، میں ان کے پاس آیا ، وہ اپنے اس گھر میں محبوس و مقید تھے جسے انہوں نے خود (اپنے عیش و آرام کے لیے) بنوایا تھا ، عذاب اور مار پیٹ کے سبب ان کی ہر چیز کی صورت و شکل بدل چکی تھی ، وہ چیتھڑا پہنے ہوئے تھے ، میں نے کہا : اے بلال ! تمام تعریفیں اللہ ہی کے لیے ہیں ، میں نے آپ کو اس وقت بھی دیکھا ہے جب آپ بغیر دھول اور گردوغبار کے (نزاکت و نفاست سے) ناک پکڑ کر ہمارے پاس سے گزر جاتے تھے ، اور آج آپ اس حالت میں ہیں ؟ انہوں نے کہا : تم کس قبیلے سے تعلق رکھتے ہو ؟ میں نے کہا : بنی مرہ بن عباد سے ، انہوں نے کہا : کیا میں تم سے ایک ایسی حدیث نہ بتاؤں جس سے امید ہے کہ اللہ تمہیں اس سے فائدہ پہنچائے گا ، میں نے کہا : پیش فرمائیے ، انہوں نے کہا : مجھ سے میرے باپ ابوبردہ نے بیان کیا اور وہ اپنے باپ ابوموسیٰ اشعری سے روایت کرتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ” جس کسی بندے کو چھوٹی یا بڑی جو بھی مصیبت پہنچتی ہے اس کے گناہ کے سبب ہی پہنچتی ہے ، اور اللہ اس کے جن گناہوں سے درگزر فرما دیتا ہے وہ تو بہت ہوتے ہیں “ ۔ پھر انہوں نے آیت پڑھی « وما أصابكم من مصيبۃ فبما كسبت أيديكم ويعفو عن كثير » (الشورى : 30) پڑھی ۔ امام ترمذی کہتے ہیں : یہ حدیث غریب ہے ، اور ہم اسے صرف اسی سند سے جانتے ہیں ۔
Terms matched: 5  -  Score: 1173  -  5k


Search took 0.515 seconds