رواة الحدیث

نتائج
نتیجہ مطلوبہ تلاش لفظ / الفاظ: بهز اسد العمي 1973
کتاب/کتب میں: صحیح مسلم
69 رزلٹ جن میں تمام الفاظ آئے ہیں۔
رواۃ الحدیث: انس بن مالك الانصاري ( 720 ) ، ثابت بن اسلم البناني ( 2009 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن نافع القيسي ( 6786 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا انس ؓ سے روایت ہے رسول اللہ ﷺ میرے پاس تشریف لائے اور میں لڑکوں کے ساتھ کھیل رہا تھا ۔ آپ ﷺ نے ہم کو سلام کیا ، پھر مجھے کسی کام کے لیے بھیجا ، میں اپنی ماں کے پاس دیر سے گیا ، تو میری ماں نے کہا : تو نے کیوں دیر کی ؟ میں نے کہا : رسول اللہ ﷺ نے مجھے ایک کام کے لیے بھیجا تھا ۔ وہ بولی : کیا کام تھا ؟ میں نے کہا : وہ بھید ہے . میری ماں بولی : رسول اللہ ﷺ کا بھید کسی سے نہ کہنا ۔ سیدنا انس ؓ نے کہا : اللہ کی قسم ! اگر وہ بھید میں کسی سے کہتا تو اے ثابت تجھ سے کہتا ۔
Terms matched: 4  -  Score: 316  -  3k
رواۃ الحدیث: وهب بن وهب السوائي ( 8175 ) ، عون بن ابي جحيفة السوائي ( 6261 ) ، عمر بن ابي زائدة الهمداني ( 5897 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ عون بن ابی حجیفہ سے روایت ہے کہ ان کے باپ نے رسول اللہ ﷺ کو چمڑے کے سرخ شامیانے میں دیکھا اور میں نے بلال ؓ کو دیکھا کہ انہوں نے رسول اللہ ﷺ کے وضو کا بچا ہوا پانی نکالا تو لوگ اس کو لینے کے لئے جھپٹنے لگے پھر جس کو پانی مل گیا اس نے بدن پر مل لیا اور جس کو نہ ملا اس نے اپنے ساتھی کے ہاتھ سے ہاتھ تر کر لیا پھر میں نے بلال ؓ کو دیکھا ۔ انہوں نے برچھا نکالا اور اس کو گاڑ دیا اور رسول اللہ ﷺ سرخ جوڑا پہنے ہوئے اس کو (پنڈلیوں تک) اٹھائے ہوئے نکلے اور برچھے کی طرف کھڑے ہو کر لوگوں کے ساتھ دو رکعتیں پڑھیں اور میں نے آدمیوں کو اور جانوروں کو دیکھا کہ وہ برچھے کے سامنے سے گزر رہے تھے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 316  -  4k
رواۃ الحدیث: زيد بن ثابت الانصاري ( 3131 ) ، بسر بن سعيد الحضرمي ( 1848 ) ، سالم بن ابي امية القرشي ( 3181 ) ، موسى بن عقبة القرشي ( 7756 ) ، وهيب بن خالد الباهلي ( 8186 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا زید بن ثابت ؓ نے کہا کہ نبی ﷺ نے بورئیے سے مسجد میں ایک حجرہ بنایا اور نبی ﷺ نے اس میں کئی رات نماز پڑھی یہاں تک کہ لوگ جمع ہوئے اور ذکر کی حدیث سابق کے مانند اور اس میں یہ زیادہ کیا کہ ” اگر فرض ہو جاتی تم پر یہ نماز تو تم اس کو ادا نہ کر سکتے ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 316  -  2k
رواۃ الحدیث: ابو هريرة الدوسي ( 4396 ) ، طاوس بن كيسان اليماني ( 4002 ) ، عبد الله بن طاوس اليماني ( 4871 ) ، وهيب بن خالد الباهلي ( 8186 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابوہریرہ ؓ نے کہا کہ نبی ﷺ نے فرمایا : ” اللہ کا حق ہے ہر مسلمان پر کہ ہر ہفتہ میں ایک بار نہائے اور اپنا سر اور بدن دھوئے ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 302  -  2k
رواۃ الحدیث: ابو هريرة الدوسي ( 4396 ) ، ابو صالح السمان ( 2840 ) ، سهيل بن ابي صالح السمان ( 3687 ) ، وهيب بن خالد الباهلي ( 8186 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابوہریرہ ؓ سے روایت ہے ، رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ”جب تم میں سے کوئی کھانا کھائے تو اپنی انگلیاں چاٹ لے ۔ کیونکہ اس کو معلوم نہیں کون سی انگلی میں برکت ہے ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: ابو صالح السمان ( 2840 ) ، عبيد الله بن مقسم القرشي ( 5436 ) ، سهيل بن ابي صالح السمان ( 3687 ) ، وهيب بن خالد الباهلي ( 8186 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ اس سند سے بھی یہ حدیث روایت کی گئی ہے ۔ اضافہ یہ ہے کہ ”غرق ہونے والا بھی شہید ہے ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  1k
رواۃ الحدیث: عبد الله بن عمر العدوي ( 4967 ) ، طاوس بن كيسان اليماني ( 4002 ) ، عبد الله بن طاوس اليماني ( 4871 ) ، وهيب بن خالد الباهلي ( 8186 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابن عمر ؓ سے روایت ہے ، رسول اللہ ﷺ نے منع کیا ٹھلیا اور تونبے سے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: ابو هريرة الدوسي ( 4396 ) ، ابو صالح السمان ( 2840 ) ، سهيل بن ابي صالح السمان ( 3687 ) ، وهيب بن خالد الباهلي ( 8186 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابوہریرہ ؓ سے روایت ہے ، منع کیا رسول اللہ ﷺ نے لاکھی اور حنتم اور لکڑی کے برتن سے (جس کو نقیر کہتے ہیں وہ کھجور کی لکڑی کو کرید کر بناتے ہیں) کسی نے سیدنا ابوہریرہ ؓ سے پوچھا : حنتم کیا ہے ؟ انہوں نے کہا : سبز گھڑے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: ابو سعيد الخدري ( 3260 ) ، المنذر بن مالك العوفي ( 1698 ) ، بشير بن عقبة الناجي ( 1907 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابوسعید ؓ سے روایت ہے ، ایک اعرابی رسول اللہ ﷺ کے پاس آیا اور بولا : ہم ایسی زمین میں رہتے ہیں جہاں گوہ بہت ہیں اور وہی کھانا ہے اکثر میرے گھر والوں کا ۔ آپ ﷺ نے اس کو جواب نہ دیا ۔ ہم نے کہا : پھر پوچھ ، اس نے پھر پوچھا ۔ آپ ﷺ نے تین بار جواب نہ دیا ، پھر تیسری بار کے بعد آپ ﷺ نے اس کو آواز دی اور فرمایا : ”اے دیہاتی اللہ جل جلالہ ، نے لعنت کی یا غصہ کیا بنی اسرائیل کے ایک گروہ پر تو ان کو جانور کر دیا وہ زمین پر چلتے ، میں نہیں جانتا کہ گوہ انہیں جانوروں میں سے ہے یا کیا ، اس لیے میں اس کو نہیں کھاتا نہ اس کو حرام کہتا ہوں ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  3k
رواۃ الحدیث: انس بن مالك الانصاري ( 720 ) ، ثابت بن اسلم البناني ( 2009 ) ، سليمان بن المغيرة القيسي ( 3570 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا انس ؓ نے کہا : میرے چچا جن کے نام پر میرا نام رکھا گیا ہے (یعنی ان کا نام بھی انس تھا) رسول اللہ ﷺ کے ساتھ بدر کی لڑائی میں شریک نہیں ہوئے یہ امر ان پر بہت دشوار گزرا اور انہوں نے کہا : میں رسول اللہ ﷺ کی پہلی لڑائی میں غائب رہا اب اگر اللہ تعالیٰ دوسری کوئی لڑائی میں مجھے آپ ﷺ کے ساتھ کرے گا تو اللہ تعالیٰ دیکھے گا میں کیا کرتا ہوں اور ڈرے اس کے سوا اور کچھ کہنے سے (یعنی اور کچھ دعویٰ کرنے سے کہ میں ایسا کروں گا ویسا کروں گا کیونکہ شاید نہ ہو سکے اور جھوٹے ہوں) پھر وہ رسول اللہ ﷺ کے ساتھ گئے احد کی لڑائی میں تو سعد بن معاذ ان کے سامنے آئے اور انہوں نے کہا : اے ابوعمرو (یہ کنیت تھی انس بن النضر بن ضمضم انصاری کی جو چچا تھے انس بن مالک ؓ کے) کہاں جاتے ہو ؟ انہوں نے کہا : افسوس جنت کی ہوا احد کی طرف سے مجھے آ رہی ہے ۔ انس ؓ نے کہا : پھر وہ لڑے کافروں سے یہاں تک کہ شہید ہوئے (لڑائی کے بعد دیکھا) تو ان کے بدن پر اسی سے زائد زخم تھے تلوار ، برچھی اور تیر کے ، ان کی بہن یعنی میری پھوپھی ربیع بنت نضر نے کہا : میں نے اپنے بھائی کو نہیں پہچانا مگر ان کی پوریں انگلیوں کی دیکھ کر (کیونکہ سارا بدن جسم زخموں سے چور چور ہو گیا تھا) اور یہ آیت « رِجَالٌ صَدَقُوا مَا عَاہَدُوا اللَّہَ عَلَيْہِ فَمِنْہُمْ مَنْ قَضَى نَحْبَہُ وَمِنْہُمْ مَنْ يَنْتَظِرُ وَمَا بَدَّلُوا تَبْدِيلاً » (الأحزاب : ۲۳) (یعنی وہ مرد جنہوں نے پورا کیا اپنا اقرار اللہ سے ۔ ۔ ۔ بعض تو اپنا کام کر چکے اور بعض انتظار کر رہے ہیں) صحابہ کہتے تھے : ان کے اور ان کے ساتھیوں کے باب میں اتری ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  6k
رواۃ الحدیث: انس بن مالك الانصاري ( 720 ) ، ثابت بن اسلم البناني ( 2009 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن نافع القيسي ( 6786 ) ، انس بن مالك الانصاري ( 720 ) ، ثابت بن اسلم البناني ( 2009 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، عفان بن مسلم الباهلي ( 5653 ) ، ابن ابي شيبة العبسي ( 5049 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا انس ؓ سے روایت ہے ، ایک جوان اسلم قبیلہ کا رسول اللہ ﷺ سے بولا : یا رسول اللہ ! میں جہاد کا ارادہ رکھتا ہوں اور میرے پاس سامان نہیں ۔ آپ ﷺ نے فرمایا : ”فلاں کے پاس جا اس نے سامان کیا تھا جہاد کا پر وہ شخص بیمار ہو گیا ۔ “ وہ شخص اس کے پاس گیا اور کہا کہ رسول اللہ ﷺ نے تجھ کو سلام کہا ہے اور فرمایا ہے کہ وہ سامان مجھ کو دیدے ۔ اس نے (اپنی بی بی یا لونڈی سے کہا) اے فلانی ! وہ سب سامان اس کو دیدے اور کوئی چیز مت رکھ اللہ کی قسم جو چیز رکھ لے گی اس میں برکت نہ ہو گی ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  3k
رواۃ الحدیث: سلمة بن كهيل الحضرمي ( 3518 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، عبد الرحمن بن بشر العبدي ( 4321 ) ، زيد بن ابي انيسة الجزري ( 3115 ) ، عبيد الله بن عمرو الاسدي ( 5425 ) ، عبد الله بن جعفر القرشي ( 4764 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، سفيان الثوري ( 3436 ) ، عبد الله بن نمير الهمداني ( 5128 ) ، محمد بن نمير الهمداني ( 7136 ) ، وكيع بن الجراح الرؤاسي ( 8160 ) ، ابن ابي شيبة العبسي ( 5049 ) ، سليمان بن مهران الاعمش ( 3629 ) ، جرير بن عبد الحميد الضبي ( 2122 ) ، قتيبة بن سعيد الثقفي ( 6460 ) ، حدیث ۔۔۔ مذکورہ بالا حدیث اس سند سے بھی مروی ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: سويد بن غفلة الجعفي ( 3714 ) ، سلمة بن كهيل الحضرمي ( 3518 ) ، شعبة بن الحجاج العتكي ( 3795 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، عبد الرحمن بن بشر العبدي ( 4321 ) ، حدیث ۔۔۔ ترجمہ وہی ہے جو اوپر گزرا ۔ اس میں یہ کہ شعبہ نے کہا : میں سلمہ سے ملا دس برس کے بعد تو وہ کہنے لگے : ایک سال تک بتلا ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: داود بن ابي هند القشيري ( 2772 ) ، يزيد بن زريع العيشي ( 8418 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ وہی جو اوپر گزرا ۔ اس میں یہ ہے کہ آپ ﷺ شام کو خطبہ کے لیے کھڑے ہوئے تو اللہ تعالیٰ کی حمد و تعریف کی ، پھر فرمایا : ”بعد اس کے کیا حال ہے لوگوں کا جب ہم جہاد کو جاتے ہیں تو ان میں سے کوئی پیچھے رہ جاتا ہے اور ایسی آواز نکالتا ہے جیسے بکری ۔ “ اخیر تک ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: شعبة بن الحجاج العتكي ( 3795 ) ، ابو داود الطيالسي ( 3585 ) ، محمد بن المثنى العنزي ( 6861 ) ، عبد الله بن مغفل المزني ( 5105 ) ، حميد بن هلال العدوي ( 2553 ) ، شعبة بن الحجاج العتكي ( 3795 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن بشار العبدي ( 6879 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا عبداللہ بن مغفل ؓ سے روایت ہے ، ایک تھیلی جس میں کھانا تھا اور چربی تھی خیبر کے روز ہماری طرف کسی نے پھینکی ، میں دوڑا اس کے لینے کو پھر جو دیکھا تو رسول اللہ ﷺ کھڑے ہیں میں نے شرم کی آپ ﷺ سے ۔ شعبہ نے ان سندوں کے ساتھ روایت کیا سوائے اس کے کہ اس روایت میں تھیلی میں چربی کا ذکر ہے اور کھانے کا ذکر نہیں ہے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  3k
رواۃ الحدیث: انس بن مالك الانصاري ( 720 ) ، ثابت بن اسلم البناني ( 2009 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا انس ؓ سے روایت ہے رسول اللہ ﷺ کے اصحاب خندق کے دن کہتے تھے ہم وہ لوگ ہیں جنہوں نے بیعت کی ہے محمد ﷺ سے اسلام پر یا جہاد پر جب تک ہم زندہ رہیں ۔ اور رسول اللہ ﷺ فرماتے تھے ”یا اللہ ! بھلائی تو آخرت کی بھلائی ہے تو بخش دے انصار اور مہاجرین کو ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: انس بن مالك الانصاري ( 720 ) ، إسحاق بن عبد الله الانصاري ( 952 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ ترجمہ وہی ہے جو اوپر گزرا ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  1k
رواۃ الحدیث: عبد الله بن العباس القرشي ( 4883 ) ، يزيد بن هرمز الليثي ( 8489 ) ، قيس بن سعد الحبشي ( 6523 ) ، جرير بن حازم الازدي ( 2119 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، يزيد بن هرمز الليثي ( 8489 ) ، قيس بن سعد الحبشي ( 6523 ) ، جرير بن حازم الازدي ( 2119 ) ، وهب بن جرير الازدي ( 8169 ) ، إسحاق بن راهويه المروزي ( 927 ) ، حدیث ۔۔۔ یزید بن ہرمز سے روایت ہے نجدہ بن عامر نے سیدنا ابن عباس ؓ کو لکھا میں سیدنا ابن عباس ؓ کے پاس موجود تھا جب انہوں نے نجدہ کی کتاب پڑھی اور جب اس کا جواب لکھا ۔ سیدنا ابن عباس ؓ نے کہا : قسم اللہ کی اگر مجھے یہ خیال نہ ہوتا کہ وہ نجاست میں گر جائے گا (یعنی حماقت کی بات کر بیٹھے گا) تو میں اس کو جواب نہ لکھتا اور اللہ کرے اس کی آنکھ کبھی ٹھنڈی نہ ہو (یعنی اس کو خوشی نصیب نہ ہو) پھر یہ لکھا ، تو نے مجھ سے پوچھا ذوالقربیٰ کا حصہ جن کا ذکر اللہ تعالیٰ نے کیا ہے وہ کون ہیں ؟ تو ہم یہ خیال کرتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ کے قرابت والے ہم لوگ ہیں لیکن ہماری قوم نے نہ مانا ۔ اور تو نے پوچھا : یتیم کی یتیمی کب ختم ہوتی ہے تو جب وہ نکاح کے قابل ہو جائے اور اس کو عقل آ جائے اور اس کا مال اس کے سپرد ہو جائے اس کی یتیمی ختم ہو گئی اور تو نے پوچھا کہ رسول اللہ ﷺ مشرکوں کے بچوں کو مارتے تھے ؟ تو رسول اللہ ﷺ مشرکوں کے کسی بچے کو نہیں مارتے تھے اور تو بھی مت مار ۔ البتہ اگر تجھے اتنا علم ہو جیسے خضر علیہ السلام کو تھا اور جب انہوں نے لڑکے کو مارا تو خیر ، اور تو نے پوچھا : عورت اور غلام کا کوئی حصہ لگے گا اگر وہ لڑائی میں شریک ہوں تو ان کو کوئی حصہ نہیں ملتا تھا مگر انعام کے طور پر غنیمت میں سے ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  6k
رواۃ الحدیث: انس بن مالك الانصاري ( 720 ) ، ثابت بن اسلم البناني ( 2009 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن نافع القيسي ( 6786 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا انس ؓ سے روایت ہے ، رسول اللہ ﷺ جب کھانا کھاتے تو اپنی تینوں انگلیاں چاٹتے اور فرماتے : ”تم میں سے کسی کا نوالہ اگر گر جائے تو اس کو صاف کر کے کھا لے اور شیطان کے لیے نہ چھوڑے ۔ “ اور حکم کیا پیالہ پونچھ لینے کا ہم کو ۔ آپ ﷺ نے فرمایا : ”تم کو معلوم نہیں کون سے کھانے میں برکت ہے ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: جابر بن عبد الله الانصاري ( 2069 ) ، محمد بن مسلم القرشي ( 7270 ) ، يزيد بن إبراهيم التستري ( 8387 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا جابر ؓ سے روایت ہے ، رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ” نہ بیماری کا لگنا کچھ ہے اور نہ غول کوئی چیز ہے اور نہ صفر کچھ ہے ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: ابو هريرة الدوسي ( 4396 ) ، ابو صالح السمان ( 2840 ) ، سهيل بن ابي صالح السمان ( 3687 ) ، وهيب بن خالد الباهلي ( 8186 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابوہریرہ ؓ سے روایت ہے ، اللہ تعالیٰ کے کچھ فرشتے ہیں جو سیر کرتے پھرتے ہیں جن کو اور کچھ کام نہیں وہ ذکر الہٰی کی مجلسوں کو ڈھونڈتے ہیں ، پھر جب کسی مجلس کو پاتے ہیں جس میں ذکر الہٰی ہوتا ہے وہاں بیٹھ جاتے ہیں اور ایک کو ایک چھا لیتے ہیں یہاں تک کہ ان کے پروں سے زمین سے لے کر آسمان تک جگہ بھر جاتی ہے جب لوگ اس مجلس سے جدا ہو جاتے ہیں تو وہ فرشتے اوپر چڑھ جاتے ہیں اور آسمان پر جاتے ہیں ، پروردگار عزوجل ان سے پوچھتا ہے حالانکہ وہ خوب جانتا ہے ، تم کہاں سے آئے ؟ وہ عرض کرتے ہیں ہم تیرے بندوں کے پاس سے آئے زمین میں ہو کر وہ تیری پاکی بول رہے ہیں اور تیری بڑائی کر رہے ہیں اور « لا الہ الا اللہ » کہہ رہے ہیں اور تیری تعریف کر رہے ہیں (یعنی « سبحان اللہ والحمد للہ ولا الہ الا واللہ اكبر » پڑھ رہے ہیں اور تجھ سے کچھ مانگتے ہیں ، پروردگار فرماتا ہے : مجھ سے کیا مانگتے ہیں ؟ فرشتے عرض کرتے ہیں. تجھ سے جنت مانگتے ہیں ۔ پروردگار فرماتا ہے : کیا انہوں نے میری جنت کو دیکھا ہے ؟ فرشتے عرض کرتے ہیں : انہوں نے تو نہیں دیکھا اے مالک ہمارے ! پروردگار فرماتا ہے : پھر اگر وہ میری جنت کو دیکھتے تو کیا حال ہوتا ان کا ؟ فرشتے عرض کرتے ہیں : وہ تیری پناہ مانگتے ہیں : پروردگار فرماتا ہے : کس چیز سے پناہ مانگتے ہیں ؟ فرشتے کہتے ہیں : تیری آگ سے ، اے مالک ہمارے ! پروردگار فرماتا ہے : کیا انہوں نے آگ کو دیکھا ہے ؟ فرشتے کہتے ہیں : نہیں ، پروردگار فرماتا ہے : پھر اگر وہ میری آگ کو دیکھتے تو ان کا حال کیا ہوتا ؟ فرشتے عرض کرتے ہیں : وہ تیری بخشش چاہتے ہیں ۔ پروردگار فرماتا ہے : (صدقے اس کے کرم اور فضل و عنایت کے) میں نے ان کو بخش دیا اور جو وہ مانگتے ہیں وہ دیا اور جس سے پناہ مانگتے ہیں اس سے پناہ دی ، پھر فرشتے عرض کرتے ہیں : اے مالک ہمارے ! ان لوگوں میں ایک فلاں بندہ بھی تھا جو گنہگار ہے ، وہ ادھر سے نکلا تو ان کے ساتھ بیٹھ گیا تھا ۔ پروردگار فرماتا ہے : میں نے اس کو بھی بخش دیا وہ لوگ ایسے ہیں جن کا ساتھی بدنصیب نہیں ہوتا ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  7k
رواۃ الحدیث: ابو هريرة الدوسي ( 4396 ) ، نفيع بن رافع المدني ( 7930 ) ، ثابت بن اسلم البناني ( 2009 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابوہریرہ ؓ سے روایت ہے ، رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ”ایک درخت مسلمانوں کو تکلیف دیتا تھا ، ایک شخص آیا اور اس نے وہ درخت کاٹ ڈالا ، وہ جنت میں گیا ۔ “
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: انس بن مالك الانصاري ( 720 ) ، شعيب بن الحبحاب الازدي ( 3804 ) ، هارون بن موسى الاعور ( 7989 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن نافع القيسي ( 6786 ) ، حدیث ۔۔۔ ترجمہ وہی ہے جو اوپر گزرا ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  1k
رواۃ الحدیث: عبد الله بن العباس القرشي ( 4883 ) ، ابو العالية الرياحي ( 2949 ) ، يوسف بن عبد الله الانصاري ( 8579 ) ، حماد بن سلمة البصري ( 2492 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابن عباس ؓ نے کہا : رسول اللہ ﷺ کو جب کوئی بڑا کام پیش آتا تو یہی دعا پڑھتے اس میں اتنا زیادہ ہے « لاَ إِلَہَ إِلاَّ اللَّہُ رَبُّ الْعَرْشِ الْكَرِيمِ » ۔ باب : سبحان اللہ وبحمدہ کی فضیلت
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  2k
رواۃ الحدیث: ابو هريرة الدوسي ( 4396 ) ، طاوس بن كيسان اليماني ( 4002 ) ، عبد الله بن طاوس اليماني ( 4871 ) ، وهيب بن خالد الباهلي ( 8186 ) ، بهز بن اسد العمي ( 1973 ) ، محمد بن حاتم السمين ( 6912 ) ، احمد بن إسحاق الحضرمي ( 410 ) ، زهير بن حرب الحرشي ( 3036 ) ، حدیث ۔۔۔ سیدنا ابوہریرہ ؓ سے روایت ہے ، رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : ”لوگ تین گروہوں پر اکٹھا کیے جائیں گے (یہ وہ حشر ہے جو قیامت سے پہلے دنیا ہی میں ہو گا اور یہ سب نشانیوں کے بعد آخری نشانی ہے) بعض خوش ہوں گے ، بعض ڈرتے ہوں گے ۔ دو ایک اونٹ پر ہوں گے ، تین ایک اونٹ پر ہوں گے ۔ چار ایک اونٹ پر ہوں گے ۔ دس ایک اونٹ پر ہوں گے اور باقی لوگوں کو آگ جمع کرے گی جب وہ رات کو ٹھہریں گے تو آگ بھی ٹھہر جائے گی اسی طرح جب دوپہر کو سوئیں گے تب آگ بھی ٹھہر جائے گی اور جہاں وہ صبح کو پہنچیں گے آگ بھی صبح کرے گی جہاں وہ شام کو پہنچیں گے آگ بھی شام کرے گی ۔ “ (غرض کہ سب لوگوں کو ہانک کر شام کے ملک کو لے جائے گی) ۔
Terms matched: 4  -  Score: 292  -  3k
Result Pages: 1 2 3 Next >>


Search took 0.677 seconds